February 8, 2020 at 12:33 pm

Pakistani people are arrested in London

کشتیوں کے ذریعے لندن میں داخل ہونے پاکستانی بارڈر سیکیورٹی فورسسز نے گرفتار کر لیے۔

برطانیہ کے حکام نے گرفتار کیے گئے پاکستانیوں کی حتمی تعداد نہیں بتائی۔

مزید پڑھیئے:غیرقانونی افراد سے بھرا ٹرک پاکستانی ڈرائیور سمیت فرانس میں گرفتار

پاکستان سے بڑی تعداد میں نوجوان بہتر مستقبل کے لیے غیر قانونی طریقے سے یورپ اور برطانیہ جاتے ہیں ۔

سہانے خواب کو عملی جامہ پہنانے کی کوشش میں درجنوں پاکستانی ہلاک بھی ہو چکےہیں۔

ذرائع کے مطابق گوجرانولہ ڈویژن، منڈی بہاؤالدین، جہلم ، گجرات اور دیگر علاقوں میں تقریبا
ہر دو تین گھر چھوڑ کر ان کے لوگ باہر کا رخ کرتے ہیں۔

مزید پڑھیئے:حکومت کا غیرقانونی تارکین وطن واپس لانے کا فیصلہ

غیر قانونی طریقوں سے یورپ میں داخل ہوتے ہوئے گزشتہ سال متعدد پاکستانی مارے گئے تھے۔

برطانیہ کی بارڈر سیکیورٹی فورسسز کے مطابق پاکستان، افغانستان، ایران، عراق اور شام کے شہریوں نے پانچ کشتیوں کے ذریعے لندن میں داخل ہونے کی کوشش کی لیکن انہیں پہلے ہی پکڑ لیا گیا۔

مجموعی طور پر 102 افراد حراست میں لیے گئے ان میں سات بچے بھی شامل ہیں۔ محض ایک روز پہلے ہی 15 بچوں سمیت 90 افراد کو گرفتار کیا گیا تھا۔

فورسز کا کہنا ہے کہ انگلش چینل کے ذریعے تیرتے ہوئے 9 تارکین وطن کینٹ کے ساحل پر پہنچنےمیں کامیاب ہو گئے تھے انہیں بھی حراست میں لیا گیا۔

خیال رہے آبی جہازوں کے لیے انگلش چینل دنیا کی مصروف ترین آبی گزر گاہ ہے۔

یہاں سے روزآنہ تقریبا 600 جہاز گزرتے ہیں اور غیرقانونی طریقے سے برطانیہ میں داخل ہونےکےلیے بھی یہی راستہ اختیار کیا جاتا ہے۔

تارکین وطن کی غیرقانونی طریقے سے برطانیہ میں داخلہ ناممکن بنانے کے لیے حکومت نے اضافی کروڑوں روپے لگائے ہیں۔

بارڈر سیکیورٹی فورسسز اور بحری فورس کے ساتھ ساتھ برطانیہ کے پانی کی ڈرون کے ذریعے بھی کڑی نگرانی کی جارہی ہے۔

گزشتہ سال بھی تقریبا 2 ہزار تارکیں وطن غیر قانونی طریقے سے برطانیہ پہنچے تھے۔

Facebook Comments