کورونا کی نئی انتہائی خطرناک C.1.2 قسم سامنے آگئی، ویکسینز بھی بے اثر

شیئر کریں:

کورونا وائرس نے ایک پھر خطرناک شکل اختیار کرلی ہے۔ اس بار کورونا نے کچھ ایسی شکل اختیار
کی ہے کہ اس پر ویکسین بھی بے اثر ہوگئی ہے۔

ابھی دنیا کورونا وائرس کے انڈین ویرئنٹ یعنی ڈیلٹا ویرئنٹ سے لڑ رہی تھی کہ افریکا سے ایک اور
بری خبر سامنے آگئی ہے۔
افریکا کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف کمیونی کیبل ڈزیز کا کہنا ہے کہ افریکا میں کورونا کی انتہائی
مہلک قسم C.1.2 سامنے آئی ہے۔ اس بار کورونا نے جیسے اپنی شکل تبدیل ہے اس کی ماضی میں
مثال نہیں ملتی۔

سائنس دانوں نے دعوی کیا ہے کہ کورونا وائرس کی یہ قسم نہ صرف انتہائی مہلک ہے بلکہ اس پر ویکسین
بھی بے اثر ہے۔ ابھی تک کورونا کی اس نئی قسم کے کیسیز کانگو، نیوزی لینڈی، پرتگال اور سویٹزر لینڈ
میں سامنے آچکے ہیں۔

صحت کے عالمی ادارے کا کہنا ہے کہ یہ وائرس انتہائی مہلک ہے تاہم ابھی تک اس وائرس کا پھیلاو ڈیلٹا
وائرس کے پھیلاو جتنا تیز نہیں۔ اگر اس وائرس کو کنٹرول کرنے میں احتیاط نہ کی گئی تو یہ بڑی تباہی
مچا سکتا ہے۔
سائنس دانوں نے بتایا کہ دنیا میں جب بھی کوئی بیماری آتی ہے تو وہ وقت اور حالات کے مطابق اپنی شکل
میں تبدیلیاں کرتی رہتی ہے۔ احتیاط سے کورونا کی نئی شکل پر قابو پانا ممکن ہے۔


شیئر کریں: