امریکی عوام جوبائیڈن سے اکتا گئے ٹرمپ کی مقبولیت میں پھر اضافہ

شیئر کریں:

امریکی صدر جوبائیڈن دور صدارت شروع ہونے کے چند ماہ بعد ہی غیر مقبول ہوگئے۔ بائیڈن کی مقبولیت
میں ہر گزرتے دن کے ساتھ کمی آرہی ہے۔ تازہ ترین امریکی ایمرسن کالج کے سروے نے جوبائیڈن کی
نیندیں اڑا کر رکھ ری ہیں۔

سروے کے مطابق آئندہ 2024 انتخابات میں سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ مقبول ترین شخصیت ہوں گے۔
امریکی تحقیقاتی ادارے نے لوگوں سے رائے لی کہ 2024 میں ہونے والے عالم انتخابات میں کس کو ووٹ دیں گے؟
47 فیصد افراد نے ٹرمپ کو ووٹ دینے تو ترجیح دی جبکہ صرف 46 فیصد جوبائیڈن کے حق میں نظر آئے۔

سروے میں حصہ لینے والے 68 فیصد نے کہا کہ وہ افغانستان میں جنگ ہارنے کی وجہ ناامید ہیں۔ اور 24
فیصد افراد نے افغان جنگ میں شکست کی زمہ دار جوبائیڈن کو قرار دیا ہے۔
طالبان نے امارات اسلامی افغانستان کی حکومت کا اعلان کر دیا
امریکا کے سیاسی امور پر نظر رکھنے والوں کا کہنا ہے کہ افغانستان سے فوج بلانے پر امریکی صدر
جوبائیڈن سے ناخوش ہیں۔

امریکی صدر جوبائیڈن کی گرتی ہوئی مقبولیت کی ایک وجہ کورونا وبا کے دوران ان کی حکمت عمل اور
وعدوں کی پاسداری نہ کرنا ہے۔

بائیڈن نے امریکی یوم آزادی پر کورونا پابندیاں ختم کیں لیکن ویکسین لگانے کی جامع حکمت عملی نہ ہونے
کی وجہ سے مسلسل ہلاکتیں ہورہی ہیں۔
دوسری طرف جوبائیڈن لاکھوں نوکریاں پیدا کرنے کا وعدہ کیا تھا جس میں وہ ناکام رہے۔
امریکی ماہرین کا کہنا ہے کہ آئندہ انتخابات میں قوی امکان ہے ٹرمپ بھرپور انداز میں وآپسی کر سکتے ہیں۔


شیئر کریں: