امریکا کی ریاست نیوجرسی میں شہادت امام زین العابدین پر جلوس

شیئر کریں:

امریکا کی دیگر ریاستوں کی طرح نیوجرسی میں بھی معرکہ کربلا کی یاد میں جلوس نکالا گیا۔ شہادت
امام زین العابدین علیہ السلام کی مناسبت سے منٹگمری اسٹریٹ سے جلوس برآمد ہوا پیغمبر اکرم
صلی اللہ علیہ والیہ وسلم کو نوحوں اور سینہ کوبی کے ذریعے شہدائے کربلا کا پرسہ دیتے ہوئے سوگوار
مختلف شاہراہوں سے ہوتے ہوئے نیوجرسی کے سٹی ہال پہنچے۔

سٹی ہال پر الوداعی مجلس عزا ہوئی جس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا یعقوب شاہد اخوندی نے 10
محرم 61 ہجری کے معرکہ کی منظر کشی کی۔ کربلا میں 72 رکنی فوج کی سپہ سالاری حضرت عباس
علمدار کے پاس تھی۔ دین اسلام پر قربانی دینے والوں کے مقابل لالچ سے لبریز یزید کے ہزاروں
پیروکار تھے۔

کربلا میں چھ ماہ سے حضرت علی اصغر سے لے کر امام حسین علیہ اسلام اور اصحاب سب ہی نے قربانی
دی۔ مساجد میں اللہ اکبر کی صدائیں اسی قربانی کا ثمر ہے آج زندہ ہے تو رسول اکرم صلی اللہ علیہ والیہ
وسلم اور ان کی آل کا لیکن یزید کا کوئی نام لینے والا نہیں۔

بس کربلا یہی درس دیتا ہے کہ ظالم کے سامنے کلمہ حق بلند کر سنت حسینی ہے اور مظلوم پر ظلم کرنا
یزید کی پیروی ہے۔جلوس میں بچے بڑے سب ہی بڑی تعداد میں شریک ہوئے۔

اس سے پہلے منٹگمری اسٹریٹ پر نماز ظہرین
ادا کی گئی اور پھر مجلس عزا منعقد ہوئی جس کے بعد شبیہہ علم و تابوت برآمد کیے گئے۔

یہ جلوس کئی سالوں سے نکالا جارہا ہے لیکن پچھلے دو سال سے کورونا وائرس کی ایس او پی پر عمل
کرتے ہوئے نکالا جارہا ہے۔ نیویارک میں بھی پہلے عشرہ میں جلوس نکالا گیا تھا


شیئر کریں: