گلبدین حکمت یار نے طالبان کے خلاف اسلحہ اٹھانے کی صدارتی پیش کش مسترد کردی

شیئر کریں:

افغانستان کے سابق صدر گلبدین حکمت یار نے موجودہ صورت حال میں کمزور ترین صدر اشرف غنی کی
جانب سے طالبان کے خلاف اسلحہ اٹھانے کی درخواست مسترد کردی ہے۔

گلبدین حکمت یار کا کہنا ہے کہ اشرف غنی حکومت نے ہمیں اسلحہ دینے کی پیشکش کی۔ تاکہ حزب
اسلامی طالبان کے خلاف لڑے۔

لیکن حزب اسلامی نے اسلحہ اٹھانے سے انکار کر دیا کیونکہ ہم امن چاہتے ہیں لڑائی کسی بھی مسئلہ کا حل
نہیں۔ حکمت یار نے اشرف غنی کو لڑائی کے بجائے عبوری حکومت قائم کرنے اور انتخاب کے ذریعے انتقال
اقتدار کا مشورہ دیا۔

افغانستان کی تیزی سے بدلتی صورت حال میں حکمت یار کا بیان ملک کے مستقبل کی سمت اہم قدم
قرار دیا جارہا ہے۔


شیئر کریں: