بھارت مقبوضہ کشمیر کا جغرافیہ تبدیل کرنے میں مصروف، اقوام متحدہ

شیئر کریں:

اقوامِ متحدہ کے ماہرین نے مقبوضہ کشمیر میں ڈیمو گرافی تبدیل کرنے سے متعلق خطرے کی گھنٹی بجا دی۔
بھارت کی مودی سرکار مقبوضہ کشمیر کی ڈیمو گرافی تبدیل کرنے میں مصروف ہے۔

ستمبر 2020ء تک ہندوستان نے ایک لاکھ چوالیس ہزار سے زیادہ ہندوؤں کو کشمیر کا ڈومیسائل دیا۔
ہندوستان نے مقامی 377,683مسلمان کشمیریوں کو ڈومیسائل دینے سے انکار کر دیا۔
اقوامِ متحدہ کے ماہرین کا کہنا ہے یہ تبدیلیاں کشمیریوں کو اُن کے مذہبی، ثقافتی اور سیاسی حقوق سے دُور
لے جائیں گی۔ ان تبدیلیوں کے نتیجے میں مقامی کشمیریوں کے گروپس کی سیاسی نمائندگی میں بھی کمی
آئے گی۔ کشمیر وہ واحد ریاست ہے جس میں مسلمانوں کی تعداد بہت زیاد ہ ہے۔
کشمیر کا ایک خاص Statusبھی خطرے میں ہے۔ برطانیہ کی پارلیمنٹ اس حوالے سے پہلے بھی آواز اُٹھا چکی ہے۔


شیئر کریں: