جنرل قاسم سلیمانی کے قتل میں اسرائیل کا کردار سامنے آگیا، موبائل ڈیٹا امریکا کو دیا

شیئر کریں:

ایران کے بااثرجنرل قاسم سلیمانی کے قتل میں اسرائیل کے اہم کردار کا انکشاف ہوا ہے۔ تازہ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ امریکا کو ڈروں حملے کے لیے تمام تر ڈیٹا اسرائیل کی ائجنسیوں نے فراہم کیا۔ قاسم سلیمانی ہر ملک میں علیحدہ موبائل فون استعمال کیا کرتے تھے۔
جنوری 2020 کے اوائل میں حملے سے پہلے جنرل سلیمانی نے اپنا موبائل فون تین بار بند کیا۔ قاسم سلیمانی انتہائی زیرک جنرل تھے وہ ٹیکنالوجی کا استعمال جانتے ہوئے احتیاط کے ساتھ موبائل استعمال کیا کرتے تھے۔

عراق میں اکثر وہ قدس فورس کے سربراہ یا ان کے کسی بااعتماد ساتھی کا موبائل فون استعمال کیا کرتے تھے۔ آخری لمحات میں امریکا اور اسرائیل کی ایجنسیاں ایک دوسرے سے رابطے میں رہیں۔
جنرل قاسم سلیمانی کا قتل یقینی بنانے کے لیے گراؤنڈ پر ایران مخالف کردوں کے بعض افراد بھی موجود تھے۔ بھیس بدل کر عراقی پولیس میں بھی خدمات انجام دے رہے تھے۔ امریکا کی مدد سے اسرائیل کی ایجنسیاں ایران مخالف گروپوں میں اپنا اثر قائم کر چکی ہیں۔
جنرل سلیمانی پر حملے کے بعد یہ باتیں سامنے آرہی تھیں کہ اسرائیل نے بھی کردار ادا کیا ہے لیکن اب یاہو نے اپنی رپورٹ میں انکشاف کردیا ہے کہ اسرائیل کا بھرپور کردار رہا ہے۔
خیال رہے اسرائیل آرٹی فیشل انٹیلی جنس میں بہت زیادہ ترقی کر چکا ہے۔ پچھلے دو سال میں اسرائیل نے ایران کو بہت نقصان پہنچایا ہے۔
جوہری سائنسدان سے لے کر نیوکلیئر پلانٹ کو بھی کامیابی سے نشانہ بنا چکا ہے۔
یاہو کی رپورٹ کے بعد ایران کی جانب سے اب اسرائیل کو جواب دینے کے امکانات بھی بڑھ گئے ہیں۔


شیئر کریں: