کراچی میں جگہ جگہ رینجرز اور پولیس، شہری پھر بھی لوٹے جارہے ہیں

شیئر کریں:

تحریر بتول فاطمہ

کراچی میں ایک بار پھر سے راہ زنی اور گاڑیاں چوری کے واقعات بڑھ گئے ہیں۔ جگہ جگہ شہر میں رینجرز، پولیس اور رضاکار موجود ہیں۔ گاڑیوں کی چیکنگ بھی بھرپور کی جارہی ہے لیکن شہریوں کو لٹنے سے کوئی نہیں بچا پارہا ہے۔
رینجرز اور پولیس کی موبائلیں ہر جگہ دیکھائی دیں گی باالخصوص پوش علاقوں ڈیفنس پھر بھی لوٹ مار کی واداتوں کو ہونا معنی خیز دیکھائی دیتا ہے۔
گھروں کے باہر اور شاہراہوں پر جا بچا کیمروں کا جال پھیلا ہوا ہے لٹیروں کو ان کی کوئی پروا نہیں۔ اے ٹی ایم مشینوں سے کیش نکلوانے والے ہوں یا عید کی خریداری کرکے گھر واپس آنے والے کوئی بھی راہ زنوں سے محفوظ نہیں۔

تین ماہ کی کارکردگی

کراچی میں جرائم کی شرح میں روز بروز اضافہ ہونے لگا ہے۔ مارچ کے مہینے میں 36 افراد کو قتل کیا گیا۔ بینک ڈکیتی کے علاوہ بھتہ خوری اور اغواء برائے تاوان کی وارداتیں بھی ہورہی ہیں۔ صرف مارچ 2021 کے دوران کراچی میں اسلحہ کے زور پر2ہزار 174 موبائل فونز، 426 موٹر سائیکلیں اور 21 گاڑیاں چھین لی گئیں۔ اس کے علاوہ 3ہزار 898 موٹر سائیکلیں اور 131 گاڑیاں چوری ہوئیَں۔
اغواء برائے تاوان، بھتہ اور بینک ڈکیتیوں کا تڑکا بھی لگایا گیا۔ سی پی ایل سی کے مطابق رواں سال 11 ہزار سے زائد موٹر سائیکلیں چوری اور ایک ہزار موٹر سائیکلیں چھین لی گئیں۔ 500 گاڑیاں چوری ہوئیں۔ تین ماہ کے دوران سڑکوں پر 6 ہزار سے زائد موبائل فونز چھینے گئے۔ 2020 کے ابتدائی تین ماہ کی نسبت رواں سال موٹر سائیکل چھیننے کی وارداتوں میں 100فیصد،موٹر سائیکل چوری میں 41فیصد اور موبائل فونز چھیننے کی وارداتوں میں 17 فیصد اضافہ ہوا۔ گاڑی چوری کی وارداتیں بھی 4 فیصد بڑھ گئیں۔

عورتیں بھی اسٹریٹ کرائم کرنے لگیں

کراچی میں سب ہی ہاتھ کی صفائی میں مصروف دیکھائی دیتے ہیں۔ سڑکوں پر جس طرح پوری پوری فیملی خیرات مانگتے ہوئے دیکھائی دیتی ہیں اسی طرح وہ لوٹ مار بھی ایک ساتھ کر رہے ہیں۔
مرد ہی نہیں اب خواتین اسٹریٹ کرمنلز بھی گلی کوچوں میں وارداتیں کررہی ہیں۔ ناظم آباد میں موٹرسائیکل عورت نے عید کی خریداری کر کے گھر لوٹنے والی فیملی کو دروازے پر لوٹ لیا۔ ملزم نے مرد اور خاتون نے شاپنگ بیگز چھینے۔

اداکارہ حرا مانی بھی گھرکی دہلیز پر لٹیں

اداکارہ حرا مانی کو گھر کی دہلیز پر لوٹ لیا گیا۔ ڈاکو گیٹ کے سامنے اداکارہ کا موبائل فون اور سونے کی چین لوٹ کر چلتے بنے۔ سی سی ٹی وی فوٹیج کے مطابق حرا مانی کی گاڑی گھر کے باہر رکتی ہے بیٹا باہر نکل کر گھر کی گھنٹی بجاتا ہے۔ جیسے ہی چھوٹا بیٹا گاڑی سے باہر آتا ہے تو دو موٹرسائیکل سوار آتے ہیں اور گن پوائنٹ پر کار میں موجود حرا مانی کو لوٹ لیتے ہیں۔ اس طرح شہری اب اپنے گھروں کی دہلیز پر بھی محفوظ نہیں رہے۔

سونار کی دکان میں 9 کروڑ کی چوری کا ڈرامہ

ایسے میں بعض لوگ آنکھوں میں دھول جھونکنے اور انشورنس کلیم کرنے کے لیے خود بھی چوری کو ڈرامہ رچادیتے ہیں۔ ایسا ہی واقعہ کلفٹن میں 3 مئی کی دوپہر کو پیش آیا جہاں تین تلوار کے قریب سونار نے اپنی ہی دکان پر 9 کروڑ روپے مالیت کا سونا چوری کیا اور مقدمہ درج کرادیا۔
موجودہ وقت کی بڑی ڈکیتی قرار دی گئی لیکن جلد ہی کیمرہ کی آنکھ نے سب کچھ واضح کر دیا۔ پولیس کے مطابق ملزم نے جوئے میں بڑی رقم ہاری۔ 80 لاکھ روپے کا مقروض ہونے پر واردات کی منصوبہ بندی کی۔ دوست کو ملا کے چوری کی منصوبہ بندی کی اور اسے دس فیصد حصہ دینے کا لالچ دیا۔ دکان مالک صراف نے چوری کا ڈرامہ رچایا لیکن سی سی ٹی وی کیمروں نے مقدمہ درج کرانے والا خود ہی تاریں کاٹتے ہوئے دیکھا دیا۔ ملزم نے واردات کے روز تینوں ملازمین کو قبل از وقت چھٹی دے دی تھی اور خود بھی گھر چلا گیا تھا۔ ملزم دکان بند کرنے کے کچھ دیر بعد واپس آیا اور زیورات جمع کر کے دوست کے دفتر چھپا دئیے لیکن پولیس نے سب کچھ برآمد کر لیا۔

جب قانون نافذ کرنے ادارے اپنا کام کرنے میں ناکام ہوتے ہیں تو پھر اس طرح کے واقعات بھی جنم لیتے ہیں۔ جس معاشرے میں قانون کی بالادستی اور شہریوں کو امن و امان جیسے مسائل کا سامنا نہ کرنے پڑے وہاں کسی کو چوری چکاری کا ڈرامہ رچانے کی ہمت نہیں ہوسکتی۔


شیئر کریں: