عوام روزمرہ اخراجات پورے کرنے کے لیے قرض لینے پر مجبور

State Bank of Pakistan
شیئر کریں:

مہنگائی نے عام آدمی کو روزمرہ اخراجات پورے کرنے کے لیے بھی قرض لینے پر مجبور کر دیا کریڈٹ کارڈ کے ذریعے
خریداری 23 فیصد بڑھ گئی رواں مالی سال 9 ماہ کے دوران عوام کی طرف سے بینکوں سے ذاتی ضروریات کے لیے
37 ارب روپے قرض بھی لیا گیا۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق رواں مالی سال کے پہلے نو ماہ کے دوران عوام کی طرف سے کریڈٹ کارڈ کے ذریعے
خریداری کے حجم میں مجموعی طور پر 9 ارب 97 کروڑ روپے کا اضافہ رکارڈ کیا گیا۔ مارچ کے اختتام تک
کریڈٹ کارڈ پر خریداری کے ذریعے لیے گئے قرضوں کا حجم 53 ارب 1 کروڑ 30 لاکھ روپے کی بلند ترین
سطح پر پہنچ گیا۔

گزشتہ مالی سال کے دوران کریڈٹ کارڈ کے قرضوں میں اضافے کی بجائے 1 ارب 34 کروڑ روپے کی کمی رکارڈ
کی گئی تھی۔

رواں مالی سال نو ماہ کے دوران کریڈٹ کارڈ پر خریداری کے علاوہ عوام کی طرف سے اس دوران بینکوں سے دوسری
ضروریات کے لیے 37 ارب 17 کروڑ روپے کے نئے قرضے بھی لیے گئے جس سے بینکوں سے عوام کے ذاتی قرضوں کا
مجموعی حجم 19.4 فیصد اضافے سے 229 ارب 22 کروڑ 30 لاکھ روپے کی رکارڈ سطح پر پہنچ گیا
گزشتہ مالی سال 12 ماہ میں عوام کے ذاتی قرضوں میں صرف 9 ارب روپے کا اضافہ ہوا تھا۔

اس قرض میں بینک ملازمین کے قرضے اور عوام کے گھر وغیرہ کی تعمیر یا گاڑی کی خریداری کے لیے گئے
قرض شامل نہیں۔ نو ماہ میں عوام کی طرف سے گھروں کی تعمیر و مرمت کے لیے مجموعی طور پر 13 ارب
76 کروڑ روپے اور ٹرانسپورٹ کی خریداری کے لیے 73 ارب 58 کروڑ روپے قرض لیا گیا۔


شیئر کریں: