حکومت نے کورونا سے بڑے پیمانے پر اموات کا خدشہ ظاہر کر دیا

شیئر کریں:

پاکستان میں کورونا وائرس کی تیسری لہر نے بڑے پیمانے پر لوگوں کو اپنے پنجوں میں جکڑ لیا ہے۔ وفاقی
وزیر اسد علی نے سوشل میڈیا پر انکشاف کیاہے کہ پاکستان میں پہلی بار کورونا وائرس کے شکار ساڑھے
تین ہزار مریض انتہائی نگہداش میں ہیں۔

کورونا سے بچاؤ کی ویکسین لگانے میں پاکستان کا 109واں نمبر

کورونا وائرس جب سے پاکستان میں پھیلا ہے اتنی بڑی تعداد میں مریضوں کی حالت خراب نہیں تھی۔ ساڑھے
تین ہزار کورونا مریضوں کی حالت خراب ہونے کے سبب اموات بڑھ سکتی ہیں۔ گزشتہ روز 55ہزار 605 ٹیسٹ
کیے گئے جن میں سے 5 ہزار 20 مثبت آئے اور 81 اموات ہوئیں۔ اس وقت ملک بھر میں کورونا کے مجموعی
مریضوں کی تعداد 60 ہزار 72 ہے۔

حکومت نے شہریوں سے اپیل کی ہے وہ ایس او پیز پر عمل درآمد یقینی بنائیں۔ ماسک ہر صورت استعمال کریں
اور غیر ضروری باہر نکلنے سے گریز کیا جائے۔ لاہور میں پہلے ہی انتہائی سخت اقدامات کیے گئے ہیں لیکن عوام
کا طرز عمل افسوس ناک ہے وہ قوانین کی پاسداری کرنے پر تیار ہی دیکھائی نہیں دیتے۔

شہریوں کا بھی کہنا ہے کہ اس وبا پر قابو پانے کے لیے حکومت کو چاہیے کہ وہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو کورونا
سے بچاؤ کی ویکسین سرکاری سطح پر لگائے۔ اس موقع پر پرائیویٹ سیکٹر کے رحم و کرم پر عام کو نہ چھوڑا جائے۔


شیئر کریں: