جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ سے 7 اہم محکمے ختم کردیے گئے

شیئر کریں:

ملتان سے وجیہہ الحسن

جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ سے 7 اہم محکمے ختم کر دیئے گئے،
سات محکموں کے سیکرٹریز کے عہدے بھی ختم کرنے کی منظوری دیدی گئی،
جنوبی پنجاب سول سیکرٹریٹ میں کام بہتر انداز میں نہ چلنے اور قانونی پیچیدگیوں کے باعث محکمے ختم کئے گئے ،
صرف 15محکموں کے سیکرٹریز جنوبی پنجاب میں بیٹھیں گے اور ان کے دفاتر جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ میں قائم ہوں گے ۔

محکمہ آئی اینڈ سی کے سیکرٹری مسعود مختار کی جانب سے بھجوائی گئی
سمری کی کابینہ کمیٹی برائے قانون کے اجلاس میں منظوری دیدی گئی ۔
اجلاس کی سربراہی صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے کی جس میں بتایا گیا
کہ کچھ محکموں کے سیکرٹری جنوبی پنجاب میں تعینات کرنے سے بہت سے مسائل پید اہوگئے تھے ،

سرکاری دستاویزات کے مطابق جن محکموں کے سیکرٹریز اور دفاتر ختم کرنے کی منظوری دی گئی
ان میں محکمہ داخلہ، محکمہ خزانہ، محکمہ سروسز اینڈ جنرل ایڈمنسٹریشن ،
محکمہ پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ،محکمہ ریگولیشن، محکمہ قانون اینڈ پارلیمانی ا فیئرز، پراسیکیوشن شامل ہے ۔

جو 15محکمے جنوبی پنجاب سول سیکرٹریٹ میں کام کریں گے ان میں زراعت،
مواصلات اینڈ ورکس ، انوائرمنٹ پروٹیکشن، فاریسٹ وائلڈ لائف اینڈ فشریز،
ہائیر ایجوکیشن، ہائوسنگ اربن ڈویلپمنٹ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ، آبپاشی،
لائیوسٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ، بلدیات، پاپولیشن ویلفیئر، پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر،
سکولز ایجوکیشن، سوشل ویلفیئر اینڈ بیت المال، سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن شامل ہیں ۔

ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب کے پاس جنوبی پنجاب سے متعلق اختیارات ہوں گے ۔
وہ کسی بھی سیکرٹری کو عہدے سے ہٹا یا تعینات کرنے کی سفارش چیف سیکرٹری پنجاب کو کرسکیں گے ۔
اس حوالے سے صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے کہ کچھ انتظامی
اور قانونی پیچیدگیاں تھیں جن کو دیکھتے ہوئے کچھ محکمے جو جنوبی پنجاب میں کام کررہے تھے
ان کی منظوری پنجاب کی سب کیبنٹ کمیٹی برائے قانون کے اجلاس میں دیدی گئی ،
کابینہ سے منظوری لینے کے بعد نوٹیفکیشن محکمہ آئی اینڈ سی جاری کرے گا۔


شیئر کریں: