فلسطین فاؤنڈیشن اور حریت کانفرنس رہنماؤں کی ملاقات، مسئلہ کشمیر کے حل پر زور

شیئر کریں:

حریت کانفرنس رہنما عبد الحمید لون اور کشمیر ٹائمز کے چیف ایڈیٹر کی فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان
کے رہنماؤں سے ادارہ نوحق میں ملاقات کی۔ ملاقات میں سیکریٹری جنرل فلسطین فاونڈیشن ڈاکٹر صابر
ابو مریم،رہنما مسلم پرویز، محفوظ یار خان، مولانا باقر زیدی، پیراظہر ہمدانی، علامہ قاضی احمد نورانی
میجر قمر عباس، مطلوب اعوان، قاضی زاہد اور حاجی پرویز بھی تھے۔ ملاقات کے بعد حریت کانفرنس و
فلسطین فاونڈیشن کے رہنماوں نے مشترکہ پریس کانفرنس کی۔

کانفرنس سے خطاب میں کشمیر حریت کانفرنس رہنما عبد الحمید لون کا کہنا تھا کہ فلسطین اور کشمیر
میں بدترین مظالم ہو رہے ہیں گزشتہ کئی سالوں سے کشمیر میں قابض بھارتی افواج کے کرفیو لگایا ہوا ہے
جس سے عوام کی زندگی اجیرن ہو گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ آسیہ اندرابی، سید گیلانی اور یاسین ملک سمیت اہم رہنما بد ترین تشدد کا نشانہ بن
رہے ہیں۔ کشمیری عوام پاکستان کو چاہتے ہیں پاکستان کے عوام سے کشمیری عوام کی امنگیں ہیں
کشمیری عوام پاکستان کی طرف دیکھ رہے ہیں۔

کانفرنس سے خطاب میں فلسطین فاونڈیشن کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر صابر ابو مریم کا کہنا تھا کہ فلسطین
فاؤنڈیشن پاکستان کشمیری عوام کے حق خود ارادیت کی بحالی کا مطالبہ کرتی ہے۔ اقوام متحدہ کی قراردادوں
کے مطابق کشمیریوں عوام کو حق خود ارادیت دیا جائے۔ مسئلہ کشمیر اور فلسطین پر ہمارے تمام اختلافات
کی کوئی جگہ نہیں۔ ہم فلسطین اور کشمیر کی آزادی کے لئے جدوجہد جاری رکھیں گے۔26 جنوری کو ملک
بھر میں یوم سیاہ منایا جائے۔

مسلم پرویز کا کہنا تھا کہ ہم نے ہمیشہ فلسطین اور کشمیر کاز کی حمایت کی ہے۔ پاکستان کا ہر فرد کشمیر
اور فلسطین کاز کے ساتھ ہے۔ حکومت فلسطین اور کشمیر کے مسائل پر ٹھوس موقف اپنائے۔ علامہ باقر عباس
زیدی کا کہنا تھا کہ کشمیر و فلسطین کی آزادی تک جدوجہد جاری رہے گی۔ ہم کشمیر کاز کی حمایت کرتے
ہیں۔فلسطین اور کشمیر کی آزادی حتمی ہے۔ دنیا کی کوئی طاقت فلسطین اور کشمیر کی آزادی کو روک نہیں سکتی۔

علامہ قاضی احمد نورانی کا کہنا تھا کہ بھارت نے انسانیت سوز مظالم کی بد ترین تاریخ رقم کی ہے۔ کشمیر
پاکستان کی شہ رگ اور فلسطین عالم اسلام کی شہ رگ ہے۔ ہم کشمیر کی آزادی کے لئے جاری جدوجہد
کی مکمل حمایت کرتے ہیں فلسطینیوں کا حق خود ارادیت سلب کیا گیا ہے حق آزادی سلب ہے۔
مقررین نے مطالبہ کیا کہ حکومت مسئلہ کشمیر کے لئے مظاہروں کی پالیسی سے بڑھ کر عملی اقدامات انجام دے۔


شیئر کریں: