کورونا کی ویکسین “فائزر” سے الرجی کے کیسز سامنے آگئے

شیئر کریں:

کورونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین کے انسانوں پر منفی اثرات سامنے آنے لگے ہیں۔
کورونا کی وبا سے خوف زدہ لوگوں میں زندگی کی رمق ویکسین کی صورت میں سامنے آئی ہی
تھی کہ اس کے منفی اثرات بھی سامنے آگئے۔

امریکا سے خبر آئی ہے کہ اب تک پانچ افراد فائزر ویکسین لگانے کے بعد الرجی کا شکار ہو چکے ہیں۔
اس سے پہلے ایک ویکسین لگانے سے دو افراد کی اموات کے کیسز بھی ہو چکے ہیں۔
دنیا کے کئی ممالک میں تجرباتی بنیاد پر کورونا وائرس سے محفوظ رکھنے کی ویکسین لگائی جارہی ہے۔
فی الحال برطانیہ، امریکا ہو یا اسرائیل یا چین کسی بھی ملک کی ویکسین 100 فیصد کامیاب نہیں ہو سکی۔
سائسندانوں نے ویکسین میں شامل کیے جانے والے کیمیکلز پر دوبارہ سے تجربات شروع کر دیے ہیں۔
الرجی کے اسباب جاننے کے لیے “فائزر” پر مزید تجربات کیے جا رہے ہیں۔

کرہ ارض پر تمام ساڑھے سات ارب انسان کورونا وائرس سے پریشان ہیں معمولات زندگی تباہ و برباد ہو کر رہ گئے ہیں۔
دنیا بھر میں اب تک کورونا کی وبا سے 16 لاکھ 81 ہزار سے زائد انسان ہلاک ہو چکے ہیں۔
اسی طرح لاکھوں کی تعداد میں متاثر ہو کر زندگی اور موت کی کشمکش میں وینٹی لیٹر پر ہیں۔
2020 تقریبا پورا ہی کورونا کی وجہ سے متاثر ہوا جس میں دنیا بھر کی مضبوط سے مضبوط معیشتیں گر گئیں۔
کئی ائیرلائنز اور ہوٹلز بند ہو گئے بے شمار کاروبار سمٹ گئے اور بیشتر تعلیمی ادارے بھی تاحال بند ہیں۔


شیئر کریں: