کوئٹہ کی طرح لاہور کے پی ڈی ایم جلسہ میں دہشت گردی کا خدشہ

شیئر کریں:

قومی انسداد دہشت گردی اتھارٹی (نیکٹا) نے 13 دسمبر کو پاکستان میں دہشت گردوں
کی جانب سے حملے کا الرٹ جاری کردیا ہے۔
نیکٹا کی جانب سے جاری سیکیورٹی الرٹ میں کہا گیا ہے کہ کالعدم تنظيم دہشت گرد کارروائی
کرسکتی ہے۔
دہشت گردی کس شہر میں ہوسکتی ہے تاہم اس سلسے میں نیکٹا نے کوئی تفصیلات جاری نہیں کیں۔
سیکیورٹی الرٹ میں یہ کہا گیا ہے کہ دہشت گردوں کا ممکنہ حملہ لاہور میں بھی ہوسکتا ہے۔

شیخ رشید کو اچانک وفاقی وزیر داخلہ کیوں بنایا گیا؟

13دسمبر کو پی ڈی ایم کا مینار پاکستان پر جلسہ ہو رہا ہے پشاور میں ناکامی کے بعد دہشت
گردوں نے اپنے منصوبے میں رد و بدل کیا ہے۔

حملے کے خطرہ پر مختلف مقامات پر سیکیورٹی انتظامات مزید سخت کردیئے گئے ہیں عوام سے
اپیل کی گئی ہے کہ وہ مشکوک عناصر پر نظر رکھیں۔
وزیراعظم عمران خان نے بھی کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز کے تناظر میں پی ڈی ایم قیادت سے 13 دسمبر
کو مینار پاکستان کا جلسہ منسوخ کرنے کی اپیل کی ہے۔
پاکستان ڈیموکریٹک موؤمںٹ کے کوئٹہ جلسے کے وقت شہر کے قریب ہزار گنجی میں دھماکا ہوا تھا
جس میں 3 افراد جاں بحق اور 10 زخمی ہوئے تھے۔
نیکٹا نے کوئٹہ جلسے سے پہلے بھی دہشت گردی کے خطرے کا الرٹ جاری کیا تھا۔


شیئر کریں: