زیورات کی خریداری میں 21 فیصد کمی، سونے کے سکوں اور اینٹوں کی فروخت بڑھ گئی

شیئر کریں:

آمدنی میں کمی اور مہنگائی میں اضافہ کی وجہ سے پاکستان میں سونے کے زیورات کی
خریداری 21 فیصد کم ہو گئی۔
تاہم کاروبار اور صنعتی سیکٹر میں کام سست ہونے سے سونے میں سرمایہ کاری بڑھ گئی۔
ورلڈ گولڈ کونسل کے مطابق سال 2020 کی تیسری سہ ماہی کے دوران پاکستان میں 3 ہزار
6 سو کلو گرام سونے کے زیورات خریدے گئے جو گزشتہ سال سے اس عرصے سے 900 کلوگرام کم ہیں۔

گزشتہ سال 2019 کی تیسری سہ ماہی میں پاکستان میں 4 ہزار 5 سو کلو گرام سونے کے
زیورات خریدے گئے تھے۔
اس دوران سرمایہ محفوظ رکھنے کے لیے سونے کی خریداری میں چار فیصد اضافہ دیکھا گیا۔
جولائی سے ستمبر کے اختتام تک دو ہزار سات سو کلو گرام سونا اینٹوں اور سکوں کی صورت میں خریدا گیا۔
گزشتہ سال اس عرصے میں خریدی گئی سونے کی اینٹوں اور سکوں کا وزن دو ہزار چھ سو کلو تھا۔
سال کی تیسری سہ ماہی کے دوران دنیا بھر میں سونے میں سرمایہ کاری میں اضافہ دیکھا گیا تاہم
پاکستان میں اضافے کی شرح سب سے کم رہی۔

رپورٹ کے مطابق بھارت میں اس دوران سونے میں سرمایہ کاری میں 51 فیصد، چین میں 36 فیصد
کویت میں 45 فیصد اور یو اے ای میں 40 فیصد بڑھ گئی۔
کنیڈا مین تین ماہ کے دوران سونے کے سکوں اور اینٹوں کی خریداری میں 253 فیصد، امریکا میں 600 فیصد اور ترکی میں 700 فیصد سے زیادہ اضافہ رکارڈ کیا گیا۔


شیئر کریں: