کورونا نے ہمیں کیا کیا سیکھایا؟

شیئر کریں:

تحریر شہزادہ احسن اشرف شیخ
سابق چیرمین اینڈ مینجنگ ڈائریکٹر پی آئی اے
سابق وفاقی وزیر برائے صنعت و پیداوار

زندگی میں ہمیشہ تحمل رکھیں اور شکر گزار رہیں۔
ایک فلم تھیٹر نے اعلان کیا کہ ایک آٹھ منٹ کی فلم نے دنیا کی بہترین شارٹ فلم کا ایوارڈ جیتا ہے۔
میں نے فیصلہ کیا کہ اس فلم کو سینما میں مفت چلاوں گا تاکہ لوگوں کی بڑی تعداد اس فلم کو دیکھ سکے۔
فلم کی شروعات ایک کمرے کی چھت کے اسنیپ شارٹ سے ہوئے جس پر کسی قسم کی سجاوٹ نہیں تھی۔ چھت پر صرف سفید سیلنگ تھی۔
تین منٹ اسی ایک سین پر گزر گئے۔ ان تین منٹ میں کیمرہ کسی اور سین پر نہیں گیا اور نہ ہی کیمرے نے اس سیلنگ کا کوئی اور حصہ دیکھایا۔
اگلے تین منٹ بھی کیمرے کی کسی حرکت کے بغیر گزر گئے اور کئی سین تبدیل نہ ہوا۔
چھ منٹ لوگوں نے بوریت کی وجہ سے باتیں کرنا شروع کردی اور ان میں چند لوگ تو تھیٹر سے باہر نکلنے والے تھے۔
ان میں سے کچھ شائیقین نے عہدے داروں سے اعتراض کیا کہ فلم صرف وقت کا ضیا ہے۔ وہ سارا وقت چھت کی سیلنگ ہی دیکھتے رہے۔

جب لوگ سینما سے جانے لگے تو اچانک کیمرہ آہستہ آہستہ حرکت کرنے لگا۔ کیمرہ دیوار سے ہوتا ہوا زمین کی طرف بڑھا۔ تب کیمرے میں ایک بچہ بستر پر لیٹا نظر آیا۔ وہ بچہ مکمل طور پر معزور نظر آرہا تھا جو پٹھوں کے مسلے کی وجہ کسی قسم کی حرکت نہیں کرسکتا تھا۔
کیمرہ بچے کے بستر سے دوسری طرف حرکت کرتا ہے تو وہاں ایک ویل چیئر نظر آتی ہے جس کی کمر نہیں ہوتی۔
کیمرہ دوبارہ سے چھت کی سیلنگ کی طرف وآپس چلا جاتا ہے۔
فلم کے آخر میں ایک جملہ دیکھایا جاتا ہے جہاں لکھا گیا ہوتا ہے کہ
ہم نے آپ کو اس بچے کی روزانہ کی سرگرمیوں کے صرف آٹھ منٹ دیکھائے ہیں۔ ہم نے آپ کو دیکھایا ہے کہ بچہ اپنی زندگی کے تمام گھنٹے کیسے گزارتا ہ اور آپ نے اسے دیکھ نہیں سکے اور صرف چھ منٹ بعد ہی شکایات شروع کردی۔
ہمیں زندگی کے ہر گزرتے لمحے پر اللہ کا شکر گزار ہونا چاہیے۔

ہم اللہ کی ہر ایک نعمت کو اس وقت تک محسوس نہیں کرتے جب تو وہ ہم سے دور نہ چلی جائے۔
ہم ایک محدود وقت کے لیے کرفیو اور لاک ڈاون کا شکار ہیں۔
دنیا میں لاکھوں لوگ ہیں جو ساری عمر جبری کرفیو میں گزار دیتے ہیں۔ کورونا وائرس نے ہمیں خدا کی طرف سے عطا کردہ ہزاروں نعمتوں کے بارے میں سوچنے پر مجبور کیا ہے۔ ہمیں روزانہ آزادی سے گھر سے نکلنے، صاف ہوا میں سانس لینے اور زندگی کے رنگ دیکھنے پر اللہ کا شکر گزار ہونا چاہیے۔
سب تعریفیں اللہ کے لیے جس نے ہمیں بے شمار نعمتوں سے نوازا، کچھ نعمتوں کے بارے میں ہم جانتے ہیں اور دیگر کا ہمیں علم نہیں۔

ہم اللہ کا ہر نعمت کے لیے شکر ادا کرتے ہیں۔

شہزادہ احسن اشرف شیخ


شیئر کریں: