مصر میں حاضر سروس فوجی اہلکار انتخابات لڑ سکتے ہیں، پارلیمنٹ میں قانون منظور

شیئر کریں:

مصری پارلیمنٹ نے جمہوری اقدار سے ساتھ مزاق شروع کردیا۔
پارلیمنٹ نے حاضر سروس یا ریٹائرڈ فوجی اہلکار کے صدراتی انتخابات میں حصہ لینے کا قانون پاس کرلیا۔
مصری پارلیمنٹ نے گزشتہ روز ترمیم منظور کی جس کے تحت موجودہ یا سابق فوجی اہلکار صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے مجاز ہوں گے۔

سنگین غداری کیس،2 ججز نے سزائے موت ، ایک نے بری کیا،تفصیلی فیصلہ جاری

پارلیمنٹ کی نے بھاری اکثریت سے قانون میں تبدیلیاں کی ہیں۔
نئے قانون کے تحت آرمی چیف صدر عبدالفتاح السیسی کو 2030 تک برقرار رہنے کی اجازت مل جائے گی۔
عوامی جمہوریہ بننے کے بعد سے مصر کے دو صدور کے علاوہ تمام فوجی پس منظر سے تعلق رکھتے ہیں۔
مصر کی عوامی زندگی میں فوج کا کافی اثر رسوخ ہے۔
سابق اعلیٰ فوجی افسران اس وقت وزراء کے ساتھ ساتھ گورنروں کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں۔
اسلامی ممالک میں فوج کا کردار کسی سے ڈھکا چھپا نہیں۔ اس سے پہلے پاکستان کی پارلیمنٹ بھی اس وقت کے آرمی چیف جنرل پرویز مشرف کو صدر منتخب کرچکی۔


شیئر کریں: