سہاگ رات راس نہ آئی دلہا صبح چل بسا، 100 باراتی بھی کورونا کا شکار

شیئر کریں:

دلہا سہاگ رات کی صبح شادی کے دوسرے دن ہی چل بسا، دلہا کے ساتھ ساتھ 100 سے زائد
باراتی بھی کورونا وائرس کا شکار ہو گئے۔

باراتی نہیں تو کیا دلہا راجہ نے شادی کی تقریب انسٹاگرام پر نشر کردی

کورونا وائرس کے دوران شادی کی بڑی تقریب کرنا گھر والوں کو مہنگا پڑ گیا۔
بھارتی ریاست بہار میں شادی کے دوسرے روز دلہا کورونا وائرس سے ہلاک ہو گیا۔
شادی کی تقریب میں شریک ایک سو سے زائد باراتیوں کے کورونا ٹیسٹ مثبت آگئے ہیں۔

فیصل آباد میں دلہن گھر اور دلہا قرنطینہ میں سہاگ رات منائے گا

تیس سالہ گروگرام کی شادی کی تقریب پندرہ جون کو پٹنا میں ہوئی، دلہا گروگرام کی شادی
میں بڑی تعداد میں رشتہ داروں نے شرکت کی۔

شادی کے دوسرے دن ہی دلہا میاں کورونا وائرس کی وجہ سے چل بسے۔

دلہا کی ہلاکت کے بعد جب باراتیوں کے ٹیسٹ کیے گئے تو ایک سو سے زائد لوگوں
میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوگئی۔

تیس سالہ گروگرام ہریانہ میں سافٹ ویئر انجینئر تھا، دلہا کے گھر والوں کا کہنا ہے کہ گروگرام
جب شادی کے لیے ہریانہ سے گاوں وآپس آیا تو اس کی طبیعت خراب تھی۔

کورونا وائرس کا خوف،پولیس چھاپے کے وقت دلہا کو ساتھیوں نے اکیلا چھوڑ دیا

دلہا راجا میں پہلے ہی سے کورونا کی علامات موجود تھیں، دلہا کے گھروالے شادی سادگی سے
کرنا چاہتے تھے لیکن خاندان کے دباو پر بڑی تقریب کی۔

اس طرح کے کئی واقعات ہو چکے ہیں جہاں شادی یا بڑی تقریبات میں کورونا وائرس مزید پھیلا ہے۔

انتظامیہ کا کہنا ہے کہ کورونا ایس او پیز نظر انداز کرنے کی وجہ نہ صرف دلہا کی موت ہوئی بلکہ شادی
میں شریک ایک سو سے زائد لوگ کورونا وائرس کا شکار ہوئے ہیں۔

عالمی ادارہ صحت نے دنیا بھر میں پھیلنے والی وبا کی وجہ سے سماجی دوری کا نظریہ متعارف کرایا گیا
لیکن پھر بھی لوگ اس پر عملدرآمد نہیں کر رہے ہیں۔

بھارت میں نریندرا مودی کی غلط پالیسیوں پر دنیا بھر میں شدید تنقید کی جارہی ہے۔
بغیر منصوبہ بندی لاک ڈاؤن کی وجہ سے معیشت بھی تباہ ہو چکی ہے اور اب کئی دھائیاں سنھبلنے میں لگیں گی۔


شیئر کریں: