تحریک انصاف کا بجٹ پاکستان میں‌ مہنگائی کا ایک اور طوفان لے آیا

Inflation
شیئر کریں:

نیا بجٹ مہنگائی کا طوفان بھی لے آیا بجٹ کے اعلان کے بعد پہلے ہفتے کے دوران ہی مارکیٹ میں آٹے، چاول

چکن، ٹماٹر، آلو، پیاز، دودھ، دہی، گوشت سمیت کھانے پینے اور روزمرہ استعمال کی 22 بنیادی اشیا مہنگی ہو گئیں۔

Inflation

مہنگائی میں کتنا اضافہ ہوا

پاکستان ادارہ شماریات کے مطابق رواں ہفتے کے دوران کھانے پینے اور روزمرہ استعمال کی 22 اشیا کی قیمت
میں 39 فیصد تک اضافہ رکارڈ کیا گیا۔

جس سے مہنگائی میں اضافے کی اوسط شرح 1.02 فیصد اضافے سے 9.9 فیصد تک پہنچ گئی۔
ہفتے کے دوران ٹماٹر کی قیمت میں 39 فیصد، سرخ مرچ کی قیمت میں دس فیصد، آٹے کی قیمت میں 5 فیصد
اور انڈوں کی قیمت میں 4 فیصد اضافہ رکارڈ کیا گیا۔

آلو، پیاز، چکن، گوشت، تازہ دودھ اور دہی بھی مہنگا ہو گیا۔
کپڑے کی قیمت بھی بڑھ گئی رپورٹ کے مطابق ہفتے کے دوران کھانے پینے اور روزمرہ استعمال کی 51 بنیادی اشیا
میں سے 39 گزشتہ سال کے مقابلے میں 82 فیصد تک مہنگی فروخت ہوئیں۔
ہفت روزہ بنیاد پر مہنگائی میں اضافے کی اوسط شرح 9.9 فیصد رہی۔

تاہم غریب اور مڈل کلاس کو مہنگائی کا زیادہ بوجھ اٹھانا پڑا۔
ان کے لیے قیمتوں میں اضافے کی شرح 14.4 فیصد رکارڈ کی گئی۔
روز مرہ کی اشیا مہنگی ہونے کے ساتھ ساتھ سونے کی قیمت بھی بڑھ گئی۔

 


شیئر کریں: