کورونا پاکستان کا 19ویں نمبر پر لے آیا

شیئر کریں:

پاکستان میں لاک ڈاون ختم کرنے کے بعد سے کورونا کے مریضوں کی تعداد بڑھنے لگی ہے۔
کورونا وائرس سے متاثرہ ملکوں میں پاکستان انیسویں نمبر پر آگیا ہے۔
پاکستان میں 26 فروری کو کورونا کا پہلا مریض منظر عام پر آیا تھا۔
سب سے پہلے سندھ نے 13 مارچ کو لاک ڈاون کا آغاز کیا اور پھر دیگر صوبوں میں بھی شہر بند ہونے شروع ہوئے۔
لیکن صورت حال بہتر ہونے کے بجائے بگڑتی ہی جارہی ہے ۔
کورونا زدہ ممالک میں پاکستان 20ویں نمبر پرآگیا

پاکستان میں کوڈ 19 کے 45 ہزار898 رجسٹرڈ مریض ہیں۔
مجموعی طور پر 985 اموات ہو چکی ہیں، چار لاکھ 14 ہزار 254 ٹیسٹ بھی کیے جا چکے ہیں۔
پاکستان کل 13 ہزار 101 افراد کورونا کو شکست دینے میں کامیاب ہوئے ہیں۔
بگڑی صورت حال سے پہلے ڈاکٹرز تشویش کا اظہار کر چکے تھے۔
ڈاکٹرز مسلسل حکومت سے کڑے اقدامات کا مطالبہ کر رہے تھے لیکن اب ملک میں
اس وقت کہیں بھی لاک ڈاؤن نہیں۔
پنجاب رکن اسمبلی شاہین رضا کورونا سے شہید

گزشتہ روز سپریم کورٹ نے تمام شاپنگ مالز اور بازار کھولنے کا حکم دے دیا۔
عدالتی حکم کے بعد کل بازاروں میں رش دیکھنے والا تھا اسی طرح سڑکوں پر
ٹریفک بھی بہت زیادہ تھا۔
عالمی ادارہ صحت بھی خبر دار کرچکا ہے کہ لاک ڈاؤن میں نرمی کرتے ہوئے
ممالک کو بہت احتیاط سے کام لینا ہو گا۔

یہی وجہ ہے دبئی میں رات 8 بجے سے صبح 6 بجے تک کرفیو لگا دیا گیا ہے۔
بازار بھی شام سات بجے بند کر دیے جاتے ہیں اور غیر ضروری لوگ گھروں سے بھی نہیں نکل سکتے۔
اسی طرح کویت،قطر سعودی عرب، مصر اور دیگر کئی مسلمان ممالک میں
چھٹیوں اور عید کے موقع پر کرفیو اور کڑے اقدامات کا اعلان کیا ہے۔
دنیا میں کورونا سے زیادہ اموات امریکا میں ہوئی ہیں جہاں 93 ہزار لوگ ہلاک ہو چکے ہیں۔
یہی وجہ ہے کہ کینیڈا اور امریکا کے درمیان سرحد 21 مارچ سے اب تک بند ہے۔
دونوں ملکوں نے طویل ترین سرحد مزید ایک ماہ تک بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔


شیئر کریں: