میری امی

شیئر کریں:


تحریر امبرین زمان خان
امی ،اماں اور اموں یہ میں اپنی امی کو پیار سے کہتی ہوں۔
روٹین میں امی کہتی ہوں لاڈ سے اماں اور جب کوئی فرمائش پوری کروانی ہو یا کوئی کام ہو تو اموں۔
آج “مدرز ڈے” یعنی ماؤں کا عالمی دن ہے اور ماں جیسی پیاری ہستی پر لکھنا ثواب کا کام ہے۔
ماں تو پھولوں جیسی ہوتی ہے ماں تو قدرت کا وہ انمول تحفہ ہے جس کی بدولت اس دنیا میں غم بہت کم ہیں۔
اگر ماں جیسا رشتہ نہ ہوتا تو باقی رشتے کیا ہوتے کچھ بھی نہیں۔
ماں کا نام سکون دیتا ہے ماں کی آواز گھر میں برکت اور رحمت کا ذریعہ ہے۔
اللہ تعالی نے ماں کی ذات بنا کر تمام لوگوں پر کرم کر دیا۔
اس دنیا میں سب سے خوبصورت رشتہ ماں کا ہے کوئی وضاحت کوئی دلیل اس کے سامنے نہیں ہو سکتی۔
یہ حقیقت کوئی جھٹلا نہیں سکتا کہ ماں کے بعد اگر کوئی آپ سے پیار کرتا ہے تو اللہ کیونکہ اللہ تعالی ہی ہیں جو ماں سے ستر گناہ زیادہ اپنی مخلوق سے پیار کرتے ہیں۔
سب سے اہم ماں کے قدموں میں جنت اللہ نے ایسے ہی نہیں رکھ دی۔
ماں وہ ہستی ہے جو بچوں کو جنم دیتی ہے اور بچوں کو یکسان محبت دے کر معاشرے کا کارآمد ترین شہری بناتی ہے۔
سب کے اچھے نصیبوں کی دعا کرتی ہے اور بعد میں سب کو اکھٹا جوڑ کر رکھنے کی کوشش کرتی ہے۔
اللہ تعالی ہر کسی کی امی کو صحت و تندرستی کے ساتھ لمبی زندگی دے اور اولاد کے دکھ درد سے بچائے امین ثم امین

میں اپنی امی کے بارے میں کیا بتاوں میری امی ایک انتہائی سادہ خاتون ہیں۔
ہم سب بہن بھائی ہمیشہ کہتے ہیں کہ امی نے پوری زندگی انتہائی سادگی میں گزار دی۔
ہر کسی سے پیار محبت سے ملنا دعائیں دینا میری امی کی سب سے اچھی بات جس کی وجہ سے اللہ نے امی کو بہت نوازا۔
ہمیشہ دینے والوں میں سے رہیں کبھی کسی سے لینے کا سوچا بھی نہیں اسی لیے اللہ نے اتنا ہی دیا۔
اور یہی بات ہم بہن بھائیوں نے بھی ان سے سیکھی ہے کہ لوگوں کو دیتے رہو اور اللہ کی ذات پر یقین رکھو۔
میری امی کے ذہن میں ہر وقت چل رہا ہوتا ہے کس کو کیا دینا ہے چاہے تھوڑا ہی ہو لیکن سوچتی رہتی ہیں۔
اب گاوں جانا ہے تو اس کے لیے یہ لے جانا اس کو اس چیز کی ضرورت ہے۔
ہر کسی کی طرح میری امی بھی کہتی ہیں کہ مشکل کے بعد ہمیشہ آسانی آتی ہے۔
امی نے مشکلیں بھی دیکھی ہیں لیکن اللہ ہر مشکل کا اجر دیتا ہے اس لئے صرف اللہ سے دعا کرو۔
میری امی بلکل میری نانی جیسی ہیں شکل و شبہات بھی اور عادات بھی وقت کے ساتھ ساتھ تو ہمیں لگتا بلکل ہماری نانی ہی ہیں امی ۔
شاید یہ سب کے ساتھ ہوتا ہے کہ ہر مشکل میں سب سے پہلے امی ہی یاد آتی ہیں۔
ان کے سامنے بیٹھ کر رو لیا جائے تو عجیب طرح سے طبعیت ٹھیک ہو جاتی ہے لگتا اب بس سب ٹھیک ہو جائے گا۔
امی نے دعا کر دی ہے تو بس ٹھیک ہو جائے گا سب۔
میری امی کھانا بہت اچھا بناتی ہیں خیر اب تو ہم ان کو کام کرنے ہی نہیں دیتے لیکن انھوں نے بہت مزے مزے کے روایتی کھانے ہمیں سکھا دئیے ہیں۔
جیسے ساگ، پائے، کڑھی ، پالک گوشت اور کوفتے ناجانے کیا کیا، جو اب میں بناوں یا بہن یا بھابی سب کا ذائقہ امی والا ہی آتا ہے۔
میری جتنی بھی دوست ہیں وہ اکثر امی سے دعائیں لینے کے لئے ہی فون کرتیں ہیں۔
امی اتنے پیار سے اور دل سے دعا دیتی ہیں کہ سچ میں مزا آ جاتا۔
ہم سب بہن بھائی گھر میں جب بچپن یاد کرتے ہیں اور باتیں کرتے ہیں تو مجھے ایک بات ہمیشہ یاد آتی ہے۔
میں گھر میں بہن بھائیوں میں سب چھوٹی ہوں تو امی ابو کیا بڑے بھائی سب بہت لاڈ کرتے تھے۔
میں روتی بہت تھی ہر وقت امی کی گود میں ہوتی تھی ،مجھے امی کے علاوہ کچھ سمجھ نہیں آتا امی سے محبت ناراضی ہر طرح کا اظہار کر لیا جاتا ہے۔
امی سے ناراض بھی ہوں تو پتہ ہے امی نے دعا ہی کرنی ہے کیوں کہ سب سے زیادہ وہ ہی جانتی ہیں ہمیں۔
میری امی نے ابو کی بہت خدمت کی ہر طرح کا ناز نخرہ اٹھایا۔
میرے ابو شروع سے ہی ویجیٹیرین یعنی سبزی ہی کھاتے تھے۔
ابو نے بتایا تھا کہ وہ آٹھ سال کی عمر کے تھے جب سب بھائیوں کے قربانی کے جانور الگ الگ ہوتے تھے۔
تو ابو کے قربانی کے جانور نے صحن میں تار پر لٹکے کپڑے کھا لئے اور وہ مر گیا تب سے ابو نے گوشت نہیں کھایا۔
ظاہر ہے شادی کے بعد امی کو ابو کے لئے الگ کھانا بنانا ہوتا تھا اور بچوں کے لیے الگ۔
امی بتاتی ہیں بعض دفعہ ایک سالن بناتی کہ اس میں سے سبزی یا دال ابو کو دے دیں اور گوشت ہم بچے کھا لیں لیکن ہمیشہ ابو کو پتہ چل جاتا تھا۔
لیکن امی نے ابو کی پوری زندگی ان ہی کی پسند کے کھانے بنائے اور ہمیشہ خوش رکھا۔
پروردگار عالم ہمارے ابو کو جنت کے باغوں میں اہم مقام عطا فرمائے۔ الہی امین
ان کی روح ہمیشہ ہماری طرف سے پرسکون رہے اور ہم ان کے لئے صدقہ جاریہ بن جائیں) )


شیئر کریں: