امریکا کورونا کا نیامرکز،صدر ٹرمپ کا دوبارہ ٹیسٹ

شیئر کریں:

امریکا تیزی سے کورونا وائرس وبا کا نیا مرکز بننے لگا ہے وہاں ایک ہی دن میں ریکارڈ ہلاکتیں ہو چکی ہیں۔
اسی طرح ریاست نیویارک میں بھی ایک ہی دن میں 47 ہزار سے زائد کیسز کی تصدیق ہوئی ہے۔
بگڑی ہوئی صورت حال میں لاک ڈاؤن جلد اٹھانے اور معمولات زندگی بحال کرنے کا دعوی کرنے والے امریکی صدر کو خود جان کے لالے پڑ گئے ہیں۔
بڑی تعداد میں ہلاکتوں اور نیے کیسز کے بعد خوفزدہ ہو کر ڈونلڈ ٹرمپ نے دوبارہ سے اپنا بھی کورنا وائرس کا ٹیسٹ کرالیا ہے۔
کورنا وائرس نے سپر پاور کہلانے والی امریکا کی ریاست نیویارک میں صحت کی سہولیات کا پردا چاک کر دیا ہے۔
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کہتے ہیں انھوں نے دوسرا کورونا وائرس ٹیسٹ کرایا جس میں تیزرفتار تشخیصی طریقہ کار استعمال کیا گیا جس کا نتیجہ صرف15 منٹ سے بھی کم وقت میں نکلا ۔
رپورٹ کے مطابق ٹرمپ کارزلٹ دوسری مرتبہ بھی نیگیٹو آیا ہے۔
متاثرہ افراد کی تعداد تیزی سے بڑھنے کے بعد امریکی صدر نےفوج سے مدد طلب کر لی ہے۔
ریاست میں مریضوں کے سیلاب پر قابو پانے کے لیے امریکی صدر نے فوج اور وفاقی اہلکاروں سے نیویارک کے کنونشن سنٹر میں قائم عارضی اسپتال کا بھی اعلان کر دیا ۔
امریکا میں تقریبا ڈھائی لاکھ افراد کورونا وائرس سے متاثر ہو چکے ہیں اور اب تک 6 ہزار 95 اموات بھی ہو چکی ہیں۔
امریکا میں تیزی کے ساتھ مریضوں کی تعداد میں اضافے کی بنیادی وجہ بڑی سطح پر عوام کے ٹیسٹ کیے جانا بھی ہے جن ممالک میں ٹیسٹ نہیں کیے جارہے وہاں صورت حال اس سے بھی خطرناک ہو سکتی ہے۔


شیئر کریں: