کورونا مریض کی آخری خواہش “غروب آفتاب” کا نظارہ

شیئر کریں:

رپورٹ:آئی ایم ملک

کورونا کورونا اور بس کورونا، اسی کا چرچہ زبان زدعام ہے۔
چھوٹا ہو یا بڑا سب ہی کو کورونا وائرس نے اپنے خوف میں مبتلا کر رکھا ہے۔
کہتے ہیں قیامت کے روز کوئی کسی کو نہیں پہچانے گا۔
بہن بھائی اور میاں بیوی کوئی کسی کی پرواہ نہیں کرے گا۔
سب کو اپنی جان کی فکر ہو گی کہ کسی بھی طرح سے اس کی اپنی جان موت سے بچی رہے۔
لیکن اس جہان میں ایسے بھی لوگ ہیں جو بستر مرگ پر حسین نظارے اور سیکھنے کا موقع ضائع نہیں کرتے۔
کورونا وائرس کویڈ 19 کی جائے پیدائش “ووہان” میں 87 سالہ مریض نے سب کو حیران کردیا۔
کورونا سے متاثرہ معمر شخص نے ڈاکٹرز سے اپنی آخری خواہش کا اظہار کیا۔
وہ شخص سورج غروب ہونے کا نظارہ دیکھنا چاہتا تھا ڈاکٹرز نے اس کی یہ خواہش پوری کرائی۔
اسی ووہان کا گزشتہ سال غالبا نومبر کا سورج کورونا وائرس لے کر نکلا تھا۔
جاتے جاتے 87 سالہ مریض کی شائد یہ خواہش اس لیے تھی کہ وہ کورونا وائرس کو ڈوبتے ہوئے دیکھنا چاہتا ہو۔


شیئر کریں: