پہلی بار خانہ کعبہ بند کیا گیا صورت حال گھمبیر ہوگئی

شیئر کریں:

کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے بعد چین میں پھنسے پاکستانیوں کو واپس لانے کے کیس کی سماعت ہوئی۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ میرے پیدا ہونے کے بعد پہلی دفعہ دیکھا کہ خانہ کعبہ کو بند کیا گیا ہے۔

صورت حال گھمبیر ہے اسی لیے ایسے اقدامات سامنے آرہے ہیں،

وزیراعظم خود آپ کے بچوں کے بارے میں اجلاس کر رہے ہیں۔

بچوں کے والدین نے عدالت میں کہا کہ ایران سے آنے والے ہزاروں لوگوں کے لیے کوئٹہ میں الگ جگہ بنا دی گئی۔

ہمارے بچے بھی اسی طرح یہاں لا کر کسی بھی جگہ رکھ لیں، تمام ملکوں نے اپنے بچے نکال لیے لیکن ہمارے بچوں کو نہیں نکالا جا رہا۔

ہمارا کوئی احساس کرنے والا نہیں،حکومت کچھ نہیں کر رہی، بچوں کے والدین نے آبدیدہ ہوگئے۔

وکیل جہانگیر جدون نے کہا کہ طلبہ کے والدین چاہتے ہیں کہ انکے بچے رمضان سے پہلے واپس آ جائیں جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ عدالت پہلے تحریری حکم میں لکھ چکی کہ کوئی ہدایت نہیں دے سکتے۔

عدالت نے کابینہ اجلاس میں چین میں موجود طلبہ سے متعلق ہونے والے فیصلے کی رپورٹ 13 مارچ کو طلب کر لیا۔

ڈی جی وزارت خارجہ کو رپورٹ آئندہ سماعت پر پیش کرنے کا حکم دے کر کیس کی سماعت 13 مارچ تک ملتوی کر دی۔


شیئر کریں: