نوکری کیلیے حاملہ پن کا زبردستی ٹیسٹ

نوکری کیلیے حاملہ پن کا زبردستی ٹیسٹ
شیئر کریں:

خود کو جمہوریت اور انسانی حقوق کا چیمپئن کہنے والے بھارت کا مکروہ چہرہ سامنے آگیا۔
بھارتی ریاست گجرات میں خواتین کی فٹنس جانچنے کے لیے زبردستی امراض نسواں کے ٹیسٹ کیے گئے ۔

ٹرینی خواتین کلرکوں کا کہنا ہے کہ ان حاملہ پن کو چیک کرنے کے لیے زبردستی ٹیسٹ کیے گئے۔

بھارتی حکام کی طرف سے یہ ٹیسٹ لازمی قرار دیے گئے تھے۔ 100 سے زائد خواتین نے زبردستی ٹیسٹ کرنے کی شکایت کی ہے۔

خواتین کے احتجاج کے بعد بھارتی حکام انکوائری شروع کردی ہے۔ خواتین کا کہنا ہے ان کو زبردستی ایک کمرے میں لے جایا گیا۔ وہاں دس دس خواتین کو کپڑے اتارنے کے لیے مجبور کیا گیا اور خاتون ڈاکٹر نے انہیں چیک کیا۔

خواتین کا کہنا ہے اس کمرے میں صفائی کا انتظام انتہائی ناقص تھا اور اس میں پردے کا کوئی انتظام نہیں تھا۔ کمرے کا دروازہ بھی ٹوٹا ہوا تھا جس پر کپڑے کا گندہ پردہ لگایا گیا تھا۔


شیئر کریں: