قومی بچت اسکیموں میں سرمایہ کاری 54 فیصد بڑھ گئی ‬

شیئر کریں:

‫ملک میں صنعتی اور تجارتی سرگرمیاں کم ہونے کی باعث قومی بچت کی اسکیموں میں سرمایہ کاری بڑھ گئی ہے۔‬
‫رواں مالی سال قومی بچت کی اسکیموں میں گزشتہ سال کے مقابلے میں 54 فیصد زیادہ رقم جمع کرائی گئی۔‬
‫اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق رواں مالی سال کی پہلی ششماہی کے دوران قومی بچت کی اسکیموں میں مجموعی طور پر 111 ارب  82 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کی گئی۔‬
‫گزشتہ سال اس عرصے میں کی گئی سرمایہ کاری سے 39 ارب 33 کروڑ روپے زیادہ ہے۔‬
‫گزشتہ مالی سال اس عرصے میں سرمایہ کاری کاحجم 72 ارب 48 کروڑ روپے تھا۔‬
‫جولائی سے دسمبر تک 89 ارب 56 کروڑ 68 لاکھ روپے کے نئے ڈیفنس سیونگ سرٹفیکیٹ خریدے گئے۔‬
‫ریگولر انکم سرٹیفکیٹ اسکیم میں 69 ارب 88 کروڑ 78 لاکھ روپے کی نئی سرمایہ کاری آئی۔‬
‫دوسری بچت اسکیموں میں مجموعی طور پر 120 ارب 53 کروڑ روپے جمع کرائے گئے۔‬
‫تاہم اسپیشل سیونگ سرٹفیکیٹ اسکیم سے 6 ماہ میں مجموعی طور پر 10 ارب 37 کروڑ روپے نکلوائے گئے۔‬
‫40 ہزار کا نان رجسٹرڈ انعامی بانڈ ختم ہونے کی وجہ سے انعامی بانڈز میں سرمایہ کاری میں 157 ارب 79 کروڑ روپے کی کمی رکارڈ کی گئی۔‬
‫قومی بچت کی اسکیموں پر منافع کی شرح کمرشل بینکوں میں سیونگز اکاونٹس کے مقابلے میں زیادہ ہے۔


شیئر کریں: