ایران حملے میں امریکی فوجیوں کے زخمی ہونے کی 8 روز بعد تصدیق

شیئر کریں:

امریکا نے طویل انکار کے بعد عراق میں 8 جنوری کے ایرانی میزائل حملے میں گیارہ امریکی
فوجیوں کے زخمی ہونے کی تصدیق کر دی ہے۔
سینٹرل کمانڈ نے بہرحال اب اپنے فوجیوں کے زخمی ہونے کا اعتراف کر لیا ہے۔
امریکی فوجیوں کے علاج کے جرمنی اور کویت لے جایا گیا تھا۔
اس سے پہلے امریکا کا مسلسل یہی کہنا تھا کہ ایران کے حملے میں کوئی فوجی زخمی نہیں ہوا۔
ایران نے 8 جنوری کو ایک درجن سے زائد میزائل الاسد ائیر بیس پر برسائے تھے۔
امریکا کا ڈیفنس سسٹم ایرانی میزائلوں کو فضا میں ناکارہ بنانے میں ناکام رہا تھا۔

مزید پڑھیے: https://www.khabarwalay.com/2020/01/03/14002/ جنرل قاسم سلیمانی کون تھے؟

خیال رہے 3 جنوری بغداد میں امریکا کے ڈرون حملے میں ایران کی پاسدارانِ انقلاب کی قدس فورس
کے سربراہ جنرل قاسم سلیمانی اور ان کے 8 ساتھیوں کی شہادت کے بعد سے
خطہ شدید کشیدگی کی حالت میں ہے۔
امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جنرل قاسم پر امریکی مفادات پر حملوں منصوبہ بندی کا الزام
لگاتے ہوئے پیشگی کارروائی کی تھی۔
ایران نے جنرل قاسم حملہ کیس کو عالمی عدالت انصاف میں لے جانے کا اعلان کر دیا ہے۔
گو کہ امریکا ہیگ میں قائم عالمی عدالت انصاف کو تسلیم نہیں کرتا۔

 

مزید پڑھیے:https://www.khabarwalay.com/2020/01/03/14019/ سامراجیت اور پولیٹیکل اسلام عراق میں دست و گریبان

 


شیئر کریں: