January 15, 2020 at 8:57 pm

موسمیاتی تبدیلیوں کے اثرات پاکستان پر بھی شدید پڑے ہیں۔
بلوچستان، گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر میں اس سال برف باری سے بڑی تباہی ہوئی ہے۔
برف باری سے جہاں معمولات زندگی متاثر ہوئے وہیں سب سے زیادہ بھی اموات وادی نیلم میں ہی ہوئی ہیں۔
مسلسل برف باری کی وجہ سے کئی علاقوں میں برفانی تودے گرے۔
ایسے میں آزاد کشمیر کی پولیس نے ہر اول دستے کا کردار ادا کیا۔
برفانی تودوں کی وجہ سے راستے بھی بند ہو گئے۔

جگہ جگہ تودے گرنے کی تلوار سروں پر لٹکتی رہی لیکن پولیس کے جوانوں نے اپنی زندگیوں کی پروا کیے گئے
سب سے پہلے امدادی کارروائیوں کے پہنچے۔

مزید پڑھیے: https://www.khabarwalay.com/2020/01/14/15053/بارش اور برف باری سے 70 افراد ہلاک

ڈویژنل پولیس ترجمان اے ایس پی خاور علی کے مطابق نیلم کا مظفرآباد سے زمینی رابطہ بحال کرنے کی کوششیں جاری ہیں۔
قریبی پولیس اسٹیشن شاردہ اور کیل کے 50 سے زائد پولیس اہلکار شدید برف باری کے
باوجود امدادی سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔
پولیس کے جوانوں کی پوری کوشش ہے کہ جلد از جلد زمینی راستہ بحال ہو سکے۔
برف باری کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری ہے جس کی وجہ سے امداری کاموں میں دشواری کا سامنا ہے۔
وادی نیلم میں برفانی تودے گرنے سے 67 افراد جاں بحق اور 100 سے زائد زخمی ہو چکے ہیں۔

Facebook Comments