طالبان حملوں میں 28 افغان فوجی ہلاک

شیئر کریں:

افغانستان میں ایک مرتبہ پھر سے
طالبان کے حملوں میں شدت آگئی
ہے۔ طالبان کے تازہ حنلے میں 28
افغان فوجی ہلاک اور متعدد زخمی
ہو گئے ہیں۔

افغانستان میں سخت سردی کے
باوجود شمالی اور شمال مشرقی
صوبوں میں گذشتہ ہفتے سے
طالبان کے حملے روزانہ کی بنیاد
پر کیے جارہے ہیں۔ اب تک ان
حملوں میں 100 سے زائد افغان
فوجی ہلاک کیے جا چکے ہیں۔

افغان سرکاری اہلکار نے شناخت
ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے
کہ شمالی صوبے کندوز کے دشت
ارچی ضلع میں فوجی چوکی پر
طالبان نے حملہ کیا۔

یہاں 13 فوجی ہلاک اور متعدد
زخمی ہوئے۔ صوبائی کونسل کے
رکن فوزی ایفتالی نے غیر ملکی
میڈیا کو تصدیق کی ہے کہ حملے
میں افغان فوج کا بھاری جانی
نقصان ہوا ہے۔

پولیس کے مطابق مزید 15 فوجی
بلخ اور تخار صوبوں میں مارے گئے۔
طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد
نے دعویٰ کیا ہے کہ تین صوبوں
میں رات بھر جاری رہنے والے حملے
میں 50 فوجی ہلاک ہوئے۔

افغان وزارت دفاع نے بھی دعویٰ
کیا ہے کہ فضائی اور زمینی
کارروائی کے دوران درجنوں طالبان
کو ہلاک کیا گیا تاہم غیر جانبدار
ذرائع سے تصدیق نہیں ہو سکی۔

طالبان کی جانب سے حملے ایسے
وقت میں بڑھائے گئے ہیں جب امریکا
افغان طالبان کے ساتھ دوبارہ مذاکرات
شروع کر چکا ہے۔ طالبان نے گزشتہ
سال بھی اس وقت حملے تیز کیے تھے
جب امریکا کے ساتھ امن مذاکرات
حتمی مراجل پر تھے اور صرف اس
کا اعلان کیا جانا باقی تھا۔


شیئر کریں: