November 9, 2019 at 10:20 am

سکھ مذہب کے بانی بابا گرو نانک دیو جی کا 550واں جنم دن اور کرتارپور راہداری کا افتتاح۔کرتارپور راہداری بنا جدید شہر اورگردوارہ دربار صاحب دنیا کا سب سے بڑا گوردوارہ بن گیا۔پاکستان نے جو کہا کر دکھایا، کرتارپور راہداری معاہدہ 24 اکتوبر کو ہوا، افتتاح آج 9 نومبر کو ہوگا۔
“گوردوارہ دربار صاحب” سکھ برادری کی امیدوں کا مرکز بن چکا ہے۔بابا گرونانک دیو جی کے جنم دن کی تقریبات 12 نومبر سے شروع ہوں گی۔دربار صاحب بین الاقوامی سرحد زیرو پوائنٹ سے ساڑھے 4 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔نارووال کی شان گوردوارہ کرتار پور 18سال تک باباگرونانک دیو جی کا مسکن رہا۔
وزیراعظم عمران خان نے 28 نومبر 2018ء کو کرتارپور راہداری کا سنگ بنیاد رکھی۔کرتارپور راہداری 12 نومبر 2019ء کو بابا جی کے جنم دن پر یاتریوں کا خیرمقدم کرے گی۔اس راہداری کی تعمیر، گوردوارہ دربار صاحب کی تزئین و آرائش سکھ مذہب، عقائد کے مطابق کی گئی۔
کرتارپور راہداری منصوبہ مجموعی طور پر 823 ایکڑ ہے۔گوردوارہ کمپلیکس 400 ایکڑ پر محیط، 330 ایکڑ پر گوردوارہ اور تمام احاطہ ہے۔کھیتی صاحب ،سبزیوں اور پھولوں کے باغات کا رقبہ 62 ایکڑ ہے۔بابا گرونانک سے منسوب کھیتی صاحب پر فصلیں کاشت، لنگر خانہ کیلئے اناج حاصل کیا جائیگا۔گردوارہ اور ملحقہ علاقہ کو 10 گنا یا 4 سے 42 ایکڑ تک توسیع دی گئی۔گوردوارہ کے گرد ایک لاکھ 52 ہزار مربع فٹ بارہ دری تعمیر کی گئی۔بارہ دری میں درشن ڈیوڑی، سرو-ور، دیوان استھان، میوزیم، لائبریری، 500 یاتریوں کیلئے 20 رہائشی احاطے شامل ہیں۔
بابا گرونانک سے منسوب آم کے درخت، کھوئی صاحب سمیت تمام اشیاء کو محفوظ کر دیا گیا۔گردوارے میں 28 ہزار 190 مربع فٹ لنگر خانہ 2 ہزار لوگوں کو بیکوقت خدمات پیش کریگا۔رات ٹھہرنے کیلئے 1 لاکھ 15 ہزار 880 مربع فٹ پر 20 رہاشی احاطے، 700 افراد کیلئے 40 کمرے تعمیرکئے گئے ہیں۔
بابا جی کے جنم دن پر 10 ہزار یاتریوں کی رہائش کیلئے جدید خیمہ بستی قائم کی گئی ہے۔منصوبے میں 6.8 کلومیٹر سڑکیں، دریائے راوی پر 800 میٹر پل تعمیر ہوا۔جدید سہولیات سے آراستہ بارڈر ٹرمینل 13.5 ایکڑ رقبے پر تعمیر کیا گیا۔دریائے راوی پر سیلاب سے بچاؤ کیلئے 2.8 کلومیٹر پر بند بنائے گئے۔
دوسرا مرحلہ گردوارے کی مزید توسیع، 10 ہزار یاتریو‌ں کیلئے سہولیات تعمیر ہوں گی۔پاکستان دوسرے مرحلے میں بڈھی راوی کریک زیرو پوائنٹ پر 262 سے 300 میٹر پل تعمیر کریگا۔یاتریوں کی سہولت کیلئے طبی مرکز، کیوسک سینٹر، سخت سیکیورٹی انتظامات، کیمرے نصب کیے گئے ہیں۔

Facebook Comments