عالمی مارکیٹ میں پیٹرول سستا پاکستان مہنگا کیوں؟

شیئر کریں:

پی ٹی آئی حکومت نے پیٹرول کی قیمت کم کر کے عوام کو ریلیف نا دینے کی روایت برقرار رکھی ہے۔ دنیا بھر میں گزشتہ ماہ تیل سستا ہوا۔ پاکستان میں پیٹرول اور ڈیزل کی قیمت مزید بڑھا دی گئی۔عالمی مارکیٹ میں گزشتہ ماہ کے دوران خام تیل 5 سے 8 فیصد تک سستا ہوا۔ پاکستان زیادہ تر عرب لائٹ اور یو اے ای سے خام تیل لے رہا ہے،، اور وزارت پیٹرولیم کے مطابق پیٹرولیم مصنوعات کی قیمت کا تعین ہر ماہ کی 15 سے اگلے ماہ کی 15 تاریخ تک کے عرصے کی قیمتوں کی بنیاد پر کیا جاتا ہے۔ سولہ ستمبر سے پندرہ اکتوبر تک مارکیٹ میں عرب لائٹ خام تیل کی فی بیرل قیمت 68 ڈالر سے کم ہو 61 ڈالر 50 سینٹ اور دبئی خام تیل کی فی بیرل قیمت 66 ڈالر سے کم ہو کر ساڑھے 57 ڈالر تک آ گئی۔ اقتصادی ماہرین کے مطابق گزشتہ ماہ کے دوران روپے کی قدر میں بھی اضافہ دیکھا گیا۔ اس صورتحال میں پیٹرول اور ڈیزل کی قیمت 6 روپے فی لیٹر تک کم ہو سکتی تھی،، لیکن حکومت نے پیٹرول کی قیمت کم کرنے کی بجائے ایک روپے فی لیٹر بڑھا دی،، ڈیزل بھی مہنگا کر دیا۔ ماہرین کے مطابق ہو سکتا ہے سعودی عرب سے ادھار تیل مارکیٹ سے مہنگا مل رہا ہو جس کی وجہ سے حکومت قیمت کم نہیں کر رہی۔ حکومت نے صرف لائٹ ڈیزل اور مٹی کا تیل سستا کیا،، پیٹرول اور ہائی سپیڈ ڈیزل کے مقابلے میں ان کی کھپت نا ہونے کے برابر ہے۔ ماہر معاشیات کہتے ہیں پیٹرولیم مصنوعات مہنگی کرنے سے حکومت کو اپنی اخراجات پورے کرنے کے لیے فوری اور زیادہ پیسہ مل جاتا ہے۔


شیئر کریں: