آزادی مارچ کی کوریج خواتین صحافیوں پر پابندی؟

شیئر کریں:

آزادی مارچ کے شرکا نے خواتین صحافیوں کو کوریج سے روک دیا۔ جمعیت علما اسلام کا مرکزی اجتماع آج اسلام آباد میں ہورہا ہے۔ خواتین رپورٹرز اور اینکرز بھی وہاں پہنچیں تو منتظمین نے انہیں سے واپس کر دیا۔ واپس بھیجی جانے والی صحافیوں کا کہنا ہے کہ وہ اس امتیازی سلوک کی مزمت کرتی ہیں۔ ہم نیوز کے مارننگ شو کی اینکر شفا یوسف زئی کو واپس جانے پر مجبور کیا گیا۔ خواتین کو آزادی مارچ کی کوریج سے روکنے پر پی ٹی آئی رہنما ڈاکٹر اعوان نے پابندی آئین کی خلاف ورزی قرار دی ہے۔ ان کا کہنا خواتین کو سیاسی سرگرمیوں میں حصہ لینے سے روکنا آئین کے آرٹیکل 25 کی خلاف ورزی ہے۔ خواتین ملک کی اکثریتی آبادی ہیں۔ پابندی کا فیصلہ سیاسی شعور کی توہین ہے۔ خواتین کے حقوق کی باتیں کرنے کرنے والی تنظمیں نوٹس لیں۔ خواتین کی شرکت کے بغیر قیام پاکستان کی تحریک کامیاب نہیں ہو سکتی تھی۔ بابر اعوان کا کہنا تھا محترمہ فاطمہ جناح کا کردار اس کی واضح مثال ہے۔ صحافتی حلقوں نے بھی جے یو آئی کے اس عمل کی مزمت کی ہے۔


شیئر کریں: