October 11, 2019 at 11:12 pm

راوالپنڈی میں ایک ایسا انوکھا خاندان ہے جس کی پانچویں لڑکی نے سرکاری عہدوں پر فائز ہونے کے لیے سی ایس ایس کا امتحان پاس کیا ہے۔ سی ایس ایس کے لیے 23 ہزار 234 امیدواروں نے اپلائی کیا اور 14 ہزار 521 نے امتحان میں حصہ لیا۔ فائنل میں صرف 372 پاس ہوئے۔ ان میں ضحیٰ ملک شیر بھی شامل ہیں جن کی چار بڑی بہنیں پہلے ہی سی ایس ایس پاس کرکے سرکاری عہدوں پر فائز ہیں۔ بڑی بہن لیلیٰ ملک شیر نے 2008 میں سی ایس ایس پاس کیا اور وہ کراچی میں بورڈ آف ریونیو میں ڈپٹی کمشنر فائز ہیں۔ دوسری بہن شیریں ملک شیر نے 2010 میں سی ایس ایس کرکے نیشنل ہائی وے اتھارٹی اسلام آباد میں ڈائریکٹر ہیں۔ اسی طرح 2017 میں سسی ملک شیر اور ماروی ملک شیر نے سی ایس ایس کے امتحان میں حصہ لیا اور دونوں پاس ہوگئیں۔ سسی سی ای او لاہور کنٹونمنٹ میں زیرِ تربیت ہیں، ماروی اسسٹنٹ کمشنر ایبٹ آباد ہیں۔ سب سے چھوٹی بہن ضحیٰ نے بھی یہ امتحان پاس کرکے پاکستان میں ریکارڈ قائم کرلیا ہے۔

ضحیٰ کے والد محمد رفیق اعوان واپڈا میں ملازمت کرتے ہیں اور ان کا تعلق خیبر پختونخوا کے ہزارہ ڈویژن کے تربیلا شہر سے ہے۔ وہ کئی سال پہلے ملازمت کے سلسلے میں راولپنڈی منتقل ہوگئے تھے۔ پانچوں بہنوں نے پریزنٹیشن کنوینٹ ہائی اسکول راولپنڈی سے پرائمری کیا۔

Facebook Comments