October 9, 2019 at 8:07 pm

اسلام آباد میں تاجر برادری کا احتجاجی مارچ کام نا آیا ۔ ایف بی آر نے مطالبات ماننے سے انکار کر دیا ۔۔ تاجر رہنماؤں نے 28 اور 29 اکتوبر کو ملک بھر میں شٹر ڈاؤن ہڑتال کا اعلان کر دیا ۔ تاجر رہنما کہتے ہیں وہ ایف بی آر کا شناختی کارڈ والا قانون نہیں مانتے ۔۔ایف بی آر کے قوانین اور تاجر برادری کے تحفظات ۔۔۔۔ سنی نا گئی بات تو کیا ریڈزون کی طرف مارچ ۔اسلام آباد کے سیرینا چوک پر تاجر برادری اور پولیس آمنے سامنے آ گئے ۔۔۔۔۔ پولیس نے خاردار تاریں لگا کر تاجروں کا ریڈزون میں داخلہ بند کر دیا۔نجی ہوٹل میں ایف بی آر اور تاجر برادری کے نمائندگان کے درمیان ہونے والے مذاکرات ناکام ہو گئے ۔۔ جس پر تاجر برادری نے دھرنا ختم کرتے ہوئے 28 اور 29 اکتوبر کو ملک بھر میں شٹر ڈاؤن ہڑتال کی کال دیدی ۔۔ انہوں نے ایف بی آر کا شناختی کارڈ قانون ماننے سے بھی انکار کیا ۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ اب وہ حکومت کی کسی وعدے اور دعوے کو نہیں مانتے۔ ایف بی آر نے کرپشن کا بازار گرم کیا ہوا ہے اور ان کا نظام بھی بوسیدہ ہے ۔ بعدازاں مظاہرے میں شریک تاجررہنما پُرامن طور پر منتشر ہو گئے ۔

Facebook Comments