September 19, 2019 at 1:35 pm

تحریر :عمران اطہر
چین میں پاکستان کی سفیر نغمنہ عالمگیر ہاشمی کہتی ہیں کہ ہمیں اگر اپنا ملک بناناہے سب نے اپنا حصہ ڈالناہے حکومت اپنا کام کرتی رہے گی صحافت چاہے تو لوگوں کو بتا سکتی ہے کہ چین ہمارے لیے کتنا اہم ہے ۔مشکل وقت میں ہمیشہ چین ہی پاکستان کے ساتھ کھڑاہے۔ ہمارے لیے کشمیر سے بڑا کوئی ایشو نہیں، ہمارےلیے کشمیر بہت اہم ہے ۔کشمیر میں کیا ہورہاہے کس طرح کے مظالم مسلمانوں پر ڈھائے جارہےہیں یہ سب لوگوں کو سمجھانے کی ضرورت ہےاور اس مسئلے پر ہم نے ہمیشہ آواز بلند کی ہے اور دنیا کو بتایا ہے کہ کشمیر کے ساتھ جوہورہاہے وہ غلط ہورہاہے۔ چینی بہت محتاط سوچ سمجھ کر بات کرتے ہیں لیکن جب کشمیر کا مسئلہ اٹھاتوانہوں نے یک دم پاکستان کے ساتھ کھڑے ہوگئے۔ یہ ضروری ہے کہ ہم سیاست کو الگ رکھیں۔ ملکی مفادات کو مد نظر رکھ کر مل کر کام کریں۔ یہ بات انہوں نے بیجنگ میں کوئٹہ اور کراچی کے صحافیوں سے ملاقات میں کہی۔ ملاقات میں پاک چین دوستی ، جاری پراجیکٹ اور چین اور پاکستان کے مستقبل اور باہمی تعلقات کو مزید مستحکم اور مضبوط کرنے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ نغمنہ عالمگیر نے بتایا کہ چین اور پاکستان کی اکنامک سوشل اکنامک کی فلاسفی آپس میں ملتی جلتی ہے۔ دنیا ٹیکنالوجی کی وجہ سے ایک گلوبل ولیج بن گئی ہے۔ اب وہ زمانہ نہیں رہا کہ کوئی ملک کہے کہ میں اس چیز میں ماہر ہوں آج کل کوئی چیز بھی بنائیں تو اس میں چار ملکوں کا اشتراک شامل ہوتاہے۔ دنیا میں میں تجارت کا سلسلہ شروع سے ہی چلا آرہاہے۔ ڈیولیپمنٹ تھرو کنکٹیویٹی کا تصور نیا تصوربھی ہے تاریخ کے تناظر میں یہ پرانا عمل ہے پوری دنیا میں جتنی بھی ترقی ہوئی ہے اس میں مائگریشن کا عمل زیادہ ہوئی ہے۔ نغمنہ ہاشمی کہتی ہیں اس تصور کو بیلٹ اینڈ روڈ انشیوٹ یہ چینوں کے لیے بہت اہم ہے۔ جہاں یہ تجارت کرتے ہیں آپس میں ملتے ہیں ویسٹرن میڈیا اس پر کافی تنقید کرتاہے چین کے خلاف کافی تنقید ہوتی آئی ہے لیکن اس میں کوئی صداقت نہیں چائنا کا ایک اصول ہے کہ امن صرف گھر میں نہی بلکہ پڑوس میں بھی امن ہونا چائیے۔ ہمارا گھر کتنا متاثر ہوا ہے ریجنل ڈیولیپمنٹ کی وجہ سے ۔اکنامک اور ترقی کے لیے امن کی ہی ہمیں ضرورت ہے۔
پاکستانی سفیرنے بتایا کہ ہمارے لیے سی پیک بہت اہم ہے چار دہائیوں کی وجہ سے ہمارے اوپر جو حالات گزرے ہیں وہ ہم سب کو یاد ہیں۔ دہشت گردی امن وامان کی صورت حال فورسسز کی قربانیاں عام شہریوں کی قربانیاں نا قابل فراموش رہی ہیں
سی پیک فلیگ شپ پروجیکٹ ہے اس پر پوری توجہ سے کام کرنا نہایت ضروری ہے۔ اکنامک سرگرمیاں شروع ہوں گی توروزگار فراہم ہوگا اور پھرمنفی سرگرمیوں کا خاتمہ ہوگا۔ صحافیوں نے بھی انہیں بلوچستان کی ترقی اور سی پیک سے متعلق تجاویز پیش کیں۔

Facebook Comments