September 12, 2019 at 7:59 pm

اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب اور وزارت اطلاعات کے بیرون ملک کے لیے پبلیسٹی ڈیسک کے درمیان پوسٹنگ کے معاملے پر ٹھن گئی ہے۔ دونوں جانب سے ایک دوسرے کی طرف سے اقوام متحدہ کی 17 ستمبر سے شروع ہونے والی جنرل اسمبلی کی بہتر کوریج کے لیے من پسند تعیناتی کی گئی تھی لیکن دونوں نے ایک دوسرے کی سفارش رد کری ہیں۔ انتہائی مستند ذرائع نے اسلام آباد میں نمائندہ خبر والے کو نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ نیویارک اور اسلام آباد کے درمیان وزیر اعظم عمران خان کے دورہ واشنگٹن کے بعد سے جاری سرد جنگ شدت اختیار کر چکی ہے۔
نیویارک میں مستقل مندوب ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے اسلام آباد کو سابق پریس آفیسر مسعود انور کا کنٹریکٹ رینیو کرنے کی سفارش کی تھی۔ یاد رہے امسعود انور کا چار بار پہلے ہی کنٹریکٹ رینیو کیا جاچکا تھا لیکن اب اسلام آباد میں بیٹھے اطلاعات کے افسران نے ان کی مزید خدمات نہ لینے کا حتمی فیصلہ کرلیا ہے۔ اسلام آباد نے جنرل اسمبلی اجلاس کی بہتر کوریج کے لیے واشنگٹن سفارت خانہ میں موجود پریس آفیسر عابد سعید کی خدمات ملیحہ لودھی کو دیں لیکن انہوں نے اپنا شدید ردعمل دیتے ہوئے ان کی تعیناتی مسترد کر دی ہے۔ ملیحہ لودھی کا کہنا ہے انہیں اب کسی ضرورت نہیں وہ اور ان کی ٹیم خود اس میگا ایونٹ کو سنبھال لے گی۔ یہاں یہ بات زہن میں ہونی چاہئے کہ عمران خان کے دورہ واشنگٹن میں میڈیا کوریج سے متعلق انتہائی بے ضابطگیاں پیش آئی تھیں۔ پاکستان سے گئے ہوئے اور مقامی صحافیوں نے عابد سعید کی اقربا پروری کی شکایات کی تھیں۔ شکایات کی روشنی میں وزارت اطلاعات نے سخت نوٹس لیتے ہوئے عابد سعید اور ان کی ماتحت آفیسر زوبیہ کو واپس بلانے کا فیصلہ کر لیا تھا۔ لیکن عابد سعید نے جو مستقل طور پر امریکا میں سکونت اختیار کرنے کی منصوبہ بندی بنا چکے ہیں وہ ہر صورت مستقل بنیادوں پر اپنی تعیناتی امریکا ہی میں چاہتے ہیں۔ دیکھنا یہ باقی ہے کہ اقربا پروری کی یہ جنگ بیرون ملک اور کتنی جگ ہنسائی کا سبب بنے گی۔

Facebook Comments