September 12, 2019 at 12:29 pm

پنجاب کی جیلوں میں قیدیوں کی گنجائش کتنی اور ان میں کتنے مجرم ایسے ہیں جو بیماریوں میں مبتلا ہیں۔۔محکمہ جیل خانہ جات کی رپورٹ کے بعد صرف لاہور ریجن کی پانچ جیلوں میں گنجائش سے پانچ ہزار قیدی زائد ہیں تاہم یہاں نو ہزارپچاسی افراد کی گنجائش ہے۔اسی طرح پنجاب کی اڑتیس جیلوں میں میڈیکل سکرینگ کے دوان انکشاف ہوا کہ چونتیس جیلوں میں چار سو اسی قیدی ایسے ہیں جن میں ایڈز کی تشخیص ہوئی۔
یہی نہیں ،،، تین ہزار کے قریب قیدی ہیپاٹائٹس بی اور سی سے متاثرہ ہیں،،، جن میں سے اکثریت کی حالت تشویشناک ہے۔
جیلوں میں مختلف بیماریوں کی بڑھتی وباء کے باعث پنجاب حکومت نے بھی حکمت عملی بنالی ہے۔۔۔ پہلے مرحلے میں معمولی جرائم میں ملوث اور جان لیوا بیماریوں میں مبتلا پانچ ہزار سے زائد قیدیوں کو پیرول پر رہا کیا جائے گا۔۔ اس سلسلے میں فہرستیں بھی منگوا لی گئی ہیں۔ترجمان پنجاب حکومت کے مطابق پیرول پر رہا ہونیوالے قیدی جہاں اپنی سزاوں کا باقی ماندہ وقت جیل سے باہر اپنے خاندانوں کے ساتھ گزار سکیں گے وہیں جیلوں میں گنجائش کا مسلہ بھی کچھ حد تک حل ہوگا ۔۔

Facebook Comments