September 6, 2019 at 12:48 pm

تحریر بتول فاطمہ
معرکہ کربلا کے بعد حق و باطل کی سرحدیں قیامت تک کے لیے واضح ہو گئی ہیں،،، ظلم یزیدت اور امن حسینیت کا استعارہ بن گیا۔ شہادت امام حسین علیہ السلام کے بعد کائنات انسانی کو دو کردار ملے۔ یزیدیت جو بدبختی ظلم، استحصال، جبر، تفرقہ پروری اور قتل و غارت گری کا استعارہ بن گئی ،، حسینیت عدل، امن، وفا اور تحفظ دین مصطفےٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی علامت ٹھہری۔ حسینیت اخوت، محبت اور وفا کی علمبردار ہے، یزیدیت اسلام کی قدریں مٹانے کا نام ہے۔ حسینیت اسلام کی دیواروں کو پھر سے اٹھانے کا نام ہے،،، یزیدیت قوم کا خزانہ لوٹنے کا نام ہے، حسینیت قوم کی امانت بچانے کا نام ہے۔ یزیدیت جہالت کا اور حسینیت علم کا نام ہے۔ یزید ظلم کا اور حسینیت امن کا نام ہے۔ یزیدیت اندھیرے کی علامت ہے اور حسینیت روشنی کا استعارہ ہے ۔ حسینیت کا پرچم تاقیامت سربلند رہے گا،،، یزیدیت قیامت تک کے لئے مردہ ہے۔ امام عالی مقام کے اہداف و نظریات کی مخالفت یا ان کا قتل دراصل شہید کربلا ہی کی مخالفت ہے، یزید بھی امام حسین کے جسم کا نہیں ان کے ہدف و نظریے کا دشمن تھا، یزید امام حسین کا نظریہ ختم کرنا چاہتا تھااور امام کے اہداف سے خوفزدہ تھا۔ ہمیں اپنے گریبانوں میں جھانکنا ہوگا۔ امام حسین علیہ السلام کی روح ریگ کربلا سے پھر پکار رہی ہے۔
آج سیدہ زینب سلام اللہ علیھا جلتے ہوئے خیموں سے صدا دے رہی ہیں۔ آج علی اکبر اور علی اصغر کے خون کا ایک ایک قطرہ ،، اور دریائے فرات کا شہدائے کربلا کے خون سے رنگین ہونے والا کنارہ آواز دے رہا ہے کہ امام حسین علیہ السلام سے محبت کرنے والو! حسینیت کے کردار کو اپنے قول و عمل میں زندہ کرو ۔ ۔ ہر دور کے یزیدوں کو پہچانو۔ ۔ ۔ یزیدیت کو پہچانو۔ ۔ یزیدیت تمہارے اتحاد کو پارہ پارہ کرنے کے لئے سرگرم ہے، حسینیت تمہیں جوڑنے کے لئے ہے۔
یہی وقت کی آواز ہے کہ ہم اکٹھے ہوکر عالم کفر کے خلاف ایک ہوجائیں۔ اپنے اندر کی نفرتیں اور کدورتیں ختم کردیں،،، ہمیں بستی بستی قریہ قریہ محبتوں کے چراغ جلانا ہوں گے۔ کشمیر کے مسلمانوں کو ظالم و فاجر مودی سے نجات دلانے کے لیے ہم آواز ہونا ہو گا،،، کشمیر کے مسلمانوں کو تنہائی کا احساس نہ ہونے دینا،،، یہی درس کربلا ہے کہ مظلوم کے حامی بنو اور ظالم کے سامنے ڈٹ جاو،،،
کیونکہ
نہ یزید کا وہ ستم رہا، نہ زیادہ کی رہی وہ جفا
رہا تو نام حسین جسے زندہ رکھتی ہے کربلا

Facebook Comments