September 4, 2019 at 12:10 am

(عبداللہ چیمہ لندن سے) برطانیہ میں وزیراعظم بورس جانسن نے پارلیمنٹ میں اکثریت کھو دی ہے جس کے بعد قبل از وقت عام انتخابات منعقد کیے جانے کا امکان بڑھ گیا ہے۔منگل کو وزیراعظم بورس جانسن نے بریگزٹ پر پارلیمان میں ووٹنگ سے قبل اپنے باغی ارکان کی وجہ سے اکثریت کھو دی۔ بورس جانسن نے ارکان پارلیمان کے اس منصوبے کی مذمت کی جو ان کی بریگزٹ کے لیے کوشش میں رکاوٹ بن رہے ہیں اور کہا کہ یہ ’سرنڈر‘ ہے جو ان کے یورپی یونین سے نکلنے کے لیے بات چیت کے ارادے کے خلاف ہے۔ واضح رہے کہ حکمران جماعت کنزرویٹیو کے کچھ باغی ارکان اور لیبر پارٹی برطانیہ کی 31 اکتوبر کو بغیر کسی معاہدے کے یورپی یونین سے علیحدگی کو روکنے کے لیے ایک بِل منظور کروانا چاہتے ہیں۔پارلیمان کے ایوان زیریں میں ووٹنگ سے قبل وزیراعظم بورس جانسن نے کہا کہ ’ایسے حالات نہیں کہ جن میں اس طرح کی کوئی چیز میں کبھی قبول کروں گا۔‘
وزیراعظم کے حامیوں نے خبردار کیا ہے کہ بریگزٹ ووٹنگ پر شکست کی صورت میں بورس جانسن عام انتخابات کا اعلان کر دیں گے جو یورپی یونین کے اکتوبر میں ہونے والے اجلاس سے بمشکل دو ہفتے قبل منعقد کیے جائیں گے۔ خیال رہے کہ وزیراعظم بورس جانسن ہر صورت یورپی یونین سے 31اکتوبر کو نکلنے کا اعلان کر چکے ہیں۔

Facebook Comments