August 25, 2019 at 8:05 am

ایف بی آر نوٹسز کے بعد بینکوں کے ڈپازٹس میں سے ایک ماہ کے دوران 711 ارب روپے نکلوا لیے گئے۔ سب سے زیادہ کمی کنسٹرکشن سیکٹر والوں کے ڈپازٹس میں دیکھی گئی۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق مالی سال کے پہلے ماہ کے دوران کمرشل بینکوں کے ڈپازٹس میں مجموعی طور پر 710 ارب 95 کروڑ 20 لاکھ روپے کی کمی رکارڈ کی گئی اور ڈپازٹس کا مجموعی حجم 137 کھرب 47 ارب 35 کروڑ روپے رہ گیا۔ ایک ماہ میں بینکوں میں کنسٹرکشن سیکٹر والوں کے ڈپازٹس میں تقریبا 15 فیصد،، مینوفیکچرنگ سیکٹر کے ڈپازٹس میں 9.5 فیصد اور کامرس اور ٹریڈ والوں کے ڈپازٹس میں 5 فیصد کمی دیکھی گئی ۔ جولائی کے دوران تعمیراتی شعبہ کے ڈپازٹس میں سے 45 ارب روپے نکلواے گئے ان کا حجم 260 ارب 69 کروڑ روپے رہ گیا۔ مینوفیکچرنگ سیکٹر والوں کے بینک کھاتوں میں مجموعی طور پر موجود رقم 69 ارب روپے کی کمی سے 655 ارب 93 کروڑ روپے،اور کامرس اور ٹریڈ والوں کے ڈپازٹس میں موجود رقم 22 ارب 41 کروڑ روپے کی کمی سے 431 ارب 11 کروڑ روپے رہ گئی۔

Facebook Comments