July 11, 2019 at 7:57 pm

تحریر فخرکاکاخیل
پاکستان کی ترقی اور اس کا وقار دنیا بھر میں بلند کرنے کے لیے اکدار نامی ادارہ امریکا میں سرگرم ہے۔ اس ادارہ سے متعلق پاکستان میں انتہائی کم ہی لوگ ہوں گے جو اس کے کاموں سے واقف ہوں۔پاکستانیوں کو حیرت ہوگی کہ اس ادارہ اکدار کے چیف پیٹرن وزیراعظم عمران خان ہیں۔ اکدار وزیر اعظم عمران خان کی سرپرستی میں چلنے والا ادارہ ہے۔ عمران خان ڈیولیمنٹ اکیڈمک ریسرچ جو اکدار کے نام سے جانا جاتا ہے۔ یہ ادارہ 2011 میں امریکا میں قائم کیا گیا۔ اکدار نامی ادارہ عالمی سطح پر درس، ادب، فن،سائنس ، فنون لطیفہ اور تعلیم میں کوشاں ہے۔ اکدار عالمی سطح پر سائنس و ٹیکنالوجی اور تحقیق میں زرائع اور وسائل کے حصول کی جدوجہد کر رہا ہے، جس میں اس ادارہ کو اقوام متحدہ کی سرپرستی بھی حاصل ہے۔ عالمی امن ، عالمی سطح پر انسانی ترقی اور وژن فار پاکستان اس ادارے کے بنیادی اہداف ہیں۔ وژن فار پاکستان دراصل پاکستان میں عدلیہ ۔ پارلیمان اور سیاسی نظام کے حوالہ سے ٹیکنوکریٹ حفیظ چودہری کی تجاویز ہیں ، جس میں وہ کہتے ہیں امریکی طرز کا صدارتی نظام پاکستان کے مسائل کا حل ہے۔

اکدار شاہین کے نام سے ماضی کے شاندار کرکٹرز کی مدد سے نوجوان کھلاڑیوں کو ٹریننگ دے کر دنیا بھر کے مختلف پریمئر لیگز میں کھلانے کی کوشش کی جائے گی۔ اکدار کے ہی پلیٹ فارم سے یورپی یونین طرز پر جنوب ایشیاء یونین کی تشکیل کے لیے بھی کام کیا جائے گا۔ ان اقدامات کے لیئے 2030 ء کا ٹائم فریم دیا گیا ہے۔ اکدار نے خواتین کے شعبہ میں کمیلہ شمسی ایوارڈ کا اجراء کیا اور 2012 میں ملالہ یوسفزی کو یہ ایواڈ دیا گیا۔

Facebook Comments