غیرقانونی طور پر یونان جاتےہوئے10پاکستانی جاں بحق 25 زخمی

شیئر کریں:

غیرقانونی طور پر ترکی سے یونان جانے کی کوشش میں دس پاکستانی مارے گئے اور 25 زخمی زخمی ہوئے ہیں۔ ترکی سے خبروالے کو ملنے والی اطلاعات کے مطابق ہلاکتیں یونان کی سرحد کے قریب اس وقت پیش آیا جب پاکستانیوں سے بھری ہوئی کوچ ترکی سے یونان کے بارڈر کی طرف بڑھ رہی تھی۔ بارڈر سیکیورٹی فورسسز نے گاڑی کو روکا تو ڈرائیور نے رفتار بڑھا دی۔ رفتاربڑھتے ہی سیکیورٹی فورسسز نے کوچ پر گولیاں چلادیں۔ فائرنگ کے ساتھ ہی ڈرائیور چلتی گاڑی سے چھلانگ لگا گیا اور گاڑی بلڈنگ سے ٹکرا گئی۔ فائرنگ سے علی پور چٹھہ کا 23 سالہ علی مرتضیٰ، کامونکی کا قدیر علی اور پھالیہ کا عزیز شامل ہے۔ دیگر کی شناخت کا سلسلہ جاری ہے۔ پاکستانی نوجوان بہتر مستقبل کی تلاش میں ترکی گئے تھے۔ مزید بہتر روزگار کی تلاش میں ترکی سے یونان جارہے تھے۔ کوچ میں ضرورت سے زیادہ مسافر سوار کرائے گئے تھے۔ بارڈر کراس کرنے کے دوران سیکیورٹی اہلکاروں نے گاڑی کو روکنے کی کوشش کی۔ واقعہ تین سے چار روز پرانا ہے جس کی تصاویر گذشتہ روز ترکی سے سوشل میڈیا میں وائرل ہونے کے بعد وہاں مقیم پاکستانیوں نے وائرل کردیں۔ یاد رہے کہ بیرون ملک جانے والے پاکستانیوں کا یہ دوسرا بڑا حادثہ ہے۔ اس سے پہلے پاکستان کے علاقہ تربت میں بھی سنہرے مستقبل کے متلاشی کئی افرادزندگی بازی ہار چکے ہیں۔


شیئر کریں: