بجلی کے بعد گیس بلوں میں 188 فیصد اضافہ

شیئر کریں:

‫اوگرا نے گیس کی قیمت یکم جولائی سے اضافے کی سفارش کر دی کہا تو جا رہا ہے کہ اوسطا میں گیس 47 فیصد مہنگی ہو گی لیکن سفارشات کے مطابق عملی طور پر غریبوں کے گیس بل میں 188 فیصد تک اضافے کا امکان ہے۔امیروں کا بل بڑھنے کی بجائے کم بھی ہو سکتا ہے۔اوگرا کی سفارشات پر مکمل عمل درآمد کی صورت میں بڑا نشانہ غریب بنے گا۔ سب سے کم یعنی 50 کیوبک میٹر ماہانہ گیس استعمال کرنے والوں کا بل 274 روپے سے بڑھ کر 789 روپے ہو جائے گا۔ اس طرح بل میں اضافہ ہو گا 188 فیصد۔ماہانہ 50 سے 100 کیوبک میٹر گیس استعمال کرنے گھریلو صارفین کا گیس کا بل 550 روپے سے بڑھ کر 1555 روپے ہونے کا امکان ہے۔ اس طرح دوسری سیلب والوں کے بل میں 183 فیصد اضافہ کیا جائے گا۔ ماہانہ 100 سے 200 کیوبک میٹر گیس استعمال کرنے گھریلو صارفین کا گیس کا بل 2215 روپے سے بڑھ کر 3854 روپے ہو سکتا ہے۔ اس طرح تیسری سیلب والوں کے بل میں 74 فیصد اضافہ ہوگا۔ چوتھی سیلب یعنی ماہانہ 201 سے 300 کیوبک میٹر گیس استعمال کرنے گھریلو صارفین کا گیس کا بل 3449 روپے سے بڑھ کر 6918 روپے تک جا سکتا ہے۔ جس کے مطلب چوتھی سلیب والوں کے بل میں 101 فیصد اضافہ ہوگا۔ اوگرا کی دستاویزات کے مطابق ماہانہ 400 کیوبک میٹر تک گیس استعمال کرنے والے صارفین کے لیے گیس کی قیمت میں 42 فیصد اضافے کا کہا گیا ہے۔400 کیوبک میٹر سے زیادہ گیس استعمال کرنے والوں کے لیے گیس مہنگی کرنے کی بجائے ان سے وصول کی جانے والی گیس کی موجودہ قیمت میں 24 فیصد کمی کی سفارش کی گئی ہے۔‬
‫سرکاری دستاویزات کے مطابق پہلے دو سلیب کے صارفین سے گیس کی اوسط قیمت کا 50 فیصد وصول کرنے،، تیسری سیلیب والے صارفین سے گیس کی قیمت کا 75 فیصد،چوتھی سلیب والوں سے گیس کی سو فیصد قیمت اور اس سے زیادہ گیس استعمال کرنے والے صارفیسن سے گیس کی اوسط قیمت کا 150 فیصد وصول کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔


شیئر کریں: