April 12, 2019 at 9:22 am

اینگرو کول پاور منصوبہ پر بلاول کے گڈگورننس کے دعوے کی قلعی کھل گئی ہے۔ کوئلہ کی پیداوار پر بجلی کی لاگت دوہری ہوجائے گی۔ جس کے بعد عوام کو بجلی بھی چار فیصد مہنگی ملے گی۔اینگرو تھر کول منصوبے پر بڑے بڑے دعوے کیے گئے لیکن ہماری سندھ سرکار شائد کچھ بھول گئی۔منصوبے سے ماحولیاتی آلودگی پر تو پتا اثر پڑے گا ہی لیکن تھر کول مائنز سے کوئلے کی پیداواری لاگت بھی بہت زیادہ ہو جائے گی۔ بھارتی کوئلے کی کانوں میں بھی آدھی لاگت میں کوئلہ نکالا جاتا ہے۔ بجلی کی پیداوار پردگنا خرچہ ہوگا۔نیپرا تھرکول سے پیداہونے والی بجلی چار گنا مہنگی خریدے گی۔منصوبے کی تعمیر پر آنے والی لاگت بھی بھارت۔چین اور دنیا کے دیگر ممالک میں بنائے گئے کول پراجیکٹ سے کئی گنا زیادہ ہے۔ ٹرانسپورٹ کی مد میں حکومت کو دوہرا خرچہ الگ برداشت کرنا پڑتا ہے۔یہی نہیں دنیا بھر میں صرف چودہ سے پندرہ فیصد ہی انٹرنل ریٹ ادا کرنا پڑتا ہے۔لیکن تھر کول میں بیس فیصد سے زائد انٹرنل ریٹ پر پیداوار ہوگی۔ جس منصوبے کو فخر یہ پیش کش کے طور پر پیش کیا جارہا ہے ان کے مخالفین اسی کو ایک سیاسی ہتھیار کے طور پر استعمال کر سکتے ہیں۔

Facebook Comments