April 3, 2019 at 12:18 pm

ساؤتھ افریقہ سے ایبولا وائرس پاکستان منتقل ہونے کا خطرہ بڑھ گیا۔کئی مہینوں سے اسلام آباد ایئرپورٹ پر ایبولا وائرس کی شناخت کرنے والا تھرمو سکینر خراب ہوگئے ہیں۔تھرمو سکینر خراب ہونے کے ساتھ محکمہ صحت کا عملہ بھی ایئرپورٹ سے غائب ہوگئے۔افریقہ سے آنے والے مسافروں کو تھرمو سکینر سے چیک کرنا انتہائی ضروری ہوتا ہے۔ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی ہدایات پر 2014 میں بینظیر ایئرپورٹ پر تھرمو سکینر لگایا گیا تھا۔محکمہ صحت اور سول ایوی ایشن اتھارٹی مسئلے سے نظریں چرانے لگے۔ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کو بھی سب اچھا ہے کی رپورٹ دی جانے لگی۔خطرناک ایبولا وائرس سے متاثرہ 90فیصد مریض جان کی بازی ہار جاتے ہیں

Facebook Comments