March 15, 2019 at 12:03 am

یو اے ای نے بھی بڑا اب یو ٹرن لے لیا ہے۔ پاکستان کو تین ارب ڈالر کو تیل ادھار دینے کا اعلان تو کیالیکن دیا نہیں ۔ وزارت خزانہ کے مطابق بیرونی ضروریات پوری کرنے کے لیے متبادل انتظامات کیے جا رہے ہیں۔حکومت کی طرف سے جنوری کے پہلے ہفتے میں ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زید النہان کے دورہ پاکستان کے موقع پر بتایا گیا تھا کہ یو اے ای پاکستان کو زرمبادلہ کی سپورٹ کے لیے تین ارب ڈالر اور سالانہ 3.2 ارب ڈالرمالیت کا تیل موخر ادائیگی پر فراہم کرے گا تاہم اس سلسلے میں یو اے ای کی طرف سے اب تک اسٹیٹ بینک کے اکاونٹ میں دو سال کے لیے تین فیصد شرح سود پر دو ارب ڈالر ٹرانسفر کیے گئے اور ادھار تیل کی بات گول ہو گئی۔ اس بارے میں فروری کی ڈیڈ لائن مقرر کی گئی تھی لیکن مشترکہ وزارتی کمیشن کی گزشتہ ماہ طے شدہ میٹنگ یو اے ای کی طرف سے اچانک منسوخ کر دی گئی۔ تیل کا معاہدہ نہیں ہو سکا۔ وزارت خزانہ ذرائع کے مطابق یو اے ای سے ادھار تیل کا معاہدہ شاہد نا ہو سکےتاہم زرمبادلہ کی ضروریات پوری کرنے کے لیے متابدل انتظامات کیے جا رہے ہیں۔

Facebook Comments