March 14, 2019 at 10:21 am

پاکستان پوسٹل سروسز کا اخراجات کی مد میں 71 ملین روپے سے زائد کا ریکارڈ غائب ہو گیا۔ آڈیٹر جنرل نے اپنی رپورٹ میں ادارے کی جانب سے عدم تعاون کا شکوہ بھی کر دیا۔ آڈیٹر کی جانب سے نومبر 2017 میں رپورٹ کیا گیا کہ ریکارڈ نہیں ملا۔ 7 کروڑ 16 لاکھ روپے سے زائد کے اخراجات کی ادائیگیوں کا کوئی ریکارڈ ہی نہیں ہے۔
ریکارڈ میں روڈ ٹرانسپورٹرز کی 2 کروڑ 57 لاکھ سے زائد کہ ادائیگیاں بھی غائب ہیں۔ اسی طرح چار کروڑ 29 لاکھ روپے سے زائد کی دیگر ادائیگیوں کا ریکارڈ بھی غائب ہے۔ علاج معالجے، معاوضوں اور پینشنز سمیت دیگر اخراجات کا ریکارڈ بھی پیش نہیں کیا گیا۔ ڈیپارٹمنٹل اکاؤنٹس کمیٹی اجلاس میں بھی معاملہ اٹھایا گیا لیکن فائدہ کچھ نہ ہوا۔ آڈیٹر جنرل کی جانب سے متعلقہ افسران کے خلاف سخت ایکشن لینے کی سفارش کی گئی ہے۔ دیکھتے ہیں اس کا کیا بنے گا۔

Facebook Comments