March 12, 2019 at 11:56 pm

افغانستان اور امریکا کے درمیان دوحہ مذاکرات کا دور مکمل ہو گیا ہے۔ افغان طالبان وفد کی بدھ (کل) پاکستان آمد متوقع ہے۔ افغانستان میں قیام امن کے لیے طالبان اور امریکا کے مذاکرات اہم موڑ پر پہنچ گئے ہیں۔ دوحہ میں موجود ذرائع نے خبر والے کو بتایا ہے کہ فریقین نے دو نکاتی ایجنڈے پر آمادگی ظاہر کردی ہے۔ مذاکرت میں طے پایا ہے کہ امریکہ افغان سرزمین سے اپنی فوجیں وآپس بلا لے گا۔ فوجیں کب نکالیں جائیں گی اس بارے میں فیصلہ اگلی بیٹھک میں کیے جانے کا امکان ہے۔ یاد رہے سترہ سال پہلے افغانستان میں 80 ہزار کے قریب فوجی آئے تھے اب وہاں 14 ہزار رہ گئے ہیں۔ طالبان ان کی بھی جلد واپسی چاہتے ہیں۔ طالبان نے بھی آمادگی ظاہر کی ہے کہ افغان سرزمین کسی ملک کے خلاف استعمال نہیں ہونے دی جائے گی۔ ترجمان افغان طالبان کا کہنا ہے مذاکرات کے دوران فریقین میں جنگ بندی کا کوئی معاہدہ نہیں ہوا۔ ذرائع کا کہنا ہے مذاکرات اگر اسی طرح چلتے رہے تو جنگ بندی بھی دور نہیں۔ واضح رہے مذاکرات کو کامیابی کی طرف لے جانے میں پاکستان کا اہم کردار رہا ہے۔

Facebook Comments