March 5, 2019 at 11:15 am

وفاقی حکومت نے سلامتی کونسل کی جانب سے پابندی کے شکار افراد اور تنظیموں کو تحویل میں لے کر ان کے اکاؤنٹ منجمد اور ضبط کرنے کا سلامتی کونسل کا آرڈر 2019 جاری کر دیا۔دفتر خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ سلامتی کونسل کی پابندیوں کا نظام سالہا سال سے وضع کردہ ہے جس کے تحت رکن ممالک کو سلامتی کونسل کی پابندیوں سے متعلق کمیٹی کی جانب سے نامزد افراد یا اداروں کے اثاثے منجمد یا ضبط کرنے ہوتے ہیں۔
یہ حکم نامہ 2019 سلامتی کونسل اور ایف اے ٹی ایف معیارات کے مطابق تشکیل دیا گیا ہے جو سلامتی کونسل ایکٹ 1948 کی شقوں کے مطابق ہے۔وزیراطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد شروع کر دیا ہے، کسی کو ریاست کی رٹ چیلنج کرنے نہیں دیں گے۔فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ مربوط حکمت عملی کے تحت فنڈنگ روک رہے ہیں، ضرورت پڑی تو طاقت کا استعمال بھی کیا جائے گا۔

Facebook Comments