March 4, 2019 at 4:33 pm

احتساب عدالت لاہور نے سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق اور انکے بھائی کے جوڈیشل ریمانڈ میں نیب کی استدعا پر 19 مارچ تک توسیع دے دی۔پیرا گون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی خواجہ سلمان رفیق کو 4 مارچ کو ریمانڈ کی مدت ختم ہونے پر احتساب عدالت کے جج جسٹس سید نجم الحسن کے روبرو لاہور عدالت میں پیش کیا گیا۔اس موقع پر احتساب عدالت کے اندر اور باہر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے، خواجہ برادران کو بکتر بند گاڑی میں عدالت پہنچایا گیا۔ بعد ازاں احتساب عدالت میں پیرا گون ہاؤسنگ کیس کی سماعت شروع ہوئی تو خواجہ برادران کے وکیل نے کہا کہ خواجہ برادران کی تذلیل کی جا رہی ہے، جس پر جج نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ آج ایس پی ہیڈ کوارٹرز کو بلایا ہوا ہے۔خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق کے وکیل نے کہا کہ خواجہ برادران کے ساتھ ایسا سلوک کیا جا رہا ہے، جیسے یہ جنگی قیدی ہیں، پیشی کے موقع پر سڑکیں بند اور جنگی ماحول بنایا جاتا ہے۔ دوران سماعت خواجہ سعد رفیق نے بھی اپنا موقف پیش کرتے ہوئے کہا کہ مجھے جیل میں علاج معالجے کی سہولت بھی نہیں ہے، لیکن مجھے کسی اسپتال نہیں جانا۔احتساب عدالت کے جج نے کمرہ عدالت میں موجود نیب کے وکیل کو مخاطب کرتے ہوئے ریفرنس سے متعلق استفسار کیا تو نیب وکیل کا کہنا تھا کہ رپورٹ مکمل کر رہے ہیں، کچھ وقت درکار ہے۔ اس موقع پر نیب کی جانب سے مزید ریمانڈ کی استدعا کی گئی، جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے خواجہ برادران کے جوڈیشل ریمانڈ میں مزید 19 مارچ تک توسیع دیتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔اس سے قبل عدالت کی جانب سے سعد رفیق کے ریمانڈ میں 16 روز کی توسیع دی گئی تھی۔ احتساب عدالت میں خواجہ برادران کی پیشی کے موقع پر عدالت کے اطراف سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے، جب کہ کنٹینر لگا کر راستے بند کر دیئے گئے تھے۔گزشتہ سماعت 2 فروری کو لاہور کی احتساب عدالت نے نیب کی جانب سے پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار خواجہ برادران کا مزید ریمانڈ دینے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے جیل منتقل کرنے کا حکم دیا تھا۔ واضح رہے کہ گزشتہ سال 11 دسمبر کو احتساب عدالت نے خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی سلمان رفیق کی عبوری ضمانت کی درخواست خارج کردی تھی جس کے بعد نیب نے دونوں بھائیوں کو حراست میں لے لیا تھا۔خواجہ برادران کو پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں گرفتار کیا گیا ہے، جب کہ دونوں بھائی پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل سمیت 3 مقدمات میں نیب کو مطلوب تھے۔ آشیانہ ہاؤسنگ سوسائٹی کی تحقیقات میں انکشاف ہوا تھا کہ سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کے پیراگون سوسائٹی سے براہ راست روابط ہیں، پنجاب لینڈ ڈویلپمنٹ کمپنی کے ذریعے آشیانہ اسکیم لانچ کی گئی تھی۔
نیب کی جانب سے موقف اختیار کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ خواجہ برادران نے پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی سے فوائد حاصل کرتے رہے، خواجہ برادران کے نام پیراگون میں 40 کنال اراضی موجود ہے۔

Facebook Comments